کرد پروٹیکشن یونٹس کو منبج سے نکالنے میں امریکہ ناکام رہا:اردغان

ترکی کے صدر طیب اردغان نے امریکہ پر شام کے حوالے سے بدعہدی کا الزام عاید کیا ہے۔ ترک صدر کا کہنا تھا کہ شام بالخصوص شمالی علاقے منبج شہر سے کرد ملیشیا کے انخلاء کے حوالے سے واشنگٹن نے اپنے وعدے پورے نہیں کیے۔ خیال رہے کہ امریکہ اور ترکی کے درمیاں رواں سال جون میں ایک معاہدہ طے پایا تھا جس کے تحت امریکہ کو منبج شہر سے کرد پروٹیکشن یونٹس کے جنگجوؤں کو وہاں سے نکالنے کی ذمہ داری سونپی گئی تھی۔ امریکہ، کرد جنگجوؤں کے ساتھ مل کر داعش کے خلاف لڑ رہا ہے جب کہ ترکی کرد ملیشیا کو دہشت گرد تنظیم قرار دیتا ہے۔ ترک صدر نے ایک بیان میں کہا کہ کرد پروٹیکشن یونٹس کے حوالے سے امریکہ نے اپنے وعدے پورے نہیں کیے۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکہ نے جون میں شام کے شہر منبج کے حوالے سے طے پانے والے نقشہ راہ کی خلاف ورزی کی ہے۔ رجب طیب اردغان کا یہ بیان ان کی امریکہ میں جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کے موقع پر سامنے آیا۔ طیب اردغان کا کہنا تھا کہ امریکہ نے کرد جنگجوؤں کو منبج سے باہر نکالنے کے لیے ٹائم فریم دیا تھا مگر امریکہ اپنے اس وعدے پر عمل درآمد نہیں کرسکا ہے۔

جواب چھوڑیں