انکم ٹیکس دھاوے ‘ریاستی ومرکزی حکومتوں کی سازش:ریونت ریڈی

کانگریس کے کارگذار صدر اے ریونت ریڈی نے ان کے مکانات پرانکم ٹیکس دھاوں کو مرکزی وریاستی حکومتوں کی سازش قرار دیا ۔ آج یہاں اپنی قیامگاہ واقع جوبلی ہلز پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ریونت ریڈی نے کہاکہ نگرانگار چیف منسٹر کے چندرشیکھررائو جنہیں اب کچھ کام نہیں ہے‘ پرگتی بھون میں بیٹھ کر خود کوغیر محفوظ سمجھنے لگے ہیںاورکانگریس کی مقبولیت سے بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکے ہیں ۔ اقتدار پر آنے کے لئے ٹی آرایس قائدین‘ کانگریس کو نشانہ بنارہے ہیں۔ انہیں ڈرہے کہ وہ ریونت ریڈی انتخابی مہم کے دوران ٹی آرایس قائدین کی ناکامیوں اور بدعنوانیوں کا پردہ فاش کریں گے ۔چنانچہ انہیں انتخابی مہم میں حصہ لینے سے روکنے کے لئے ان کے مکانات پرانکم ٹیکس دھاوے کروائے گئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ جوبلی ہلز کے ان کے مکان کودراصل ان کے رشتہ داروں نے خریدا ہے اورانہوںنے 2014 میں مکان کی تعمیر کے لئے بینک سے قرض حاصل کیا تھا ۔ ان کے خلاف میڈیا میں جھوٹا پروپگنڈہ کیا جارہا ہے ملیشیاء ‘سنگارپورمیںان کا کاروبار ہے ۔ ان جھوٹی خبروں سے ان کے ارکان خاندان سکتہ میں آگئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ وہ 2009 اور 2014 کے انتخابات کے موقع پر وہ اپنی جائیدادکی تفصیلات الیکشن کمیشن کو پیش کرچکے ہیں۔ انہوںنے 2009 کے بعد سے آج تک کوئی جائیدادنہیں خریدی ہے ۔ انہوںنے بتایاکہ ان کے خسر نے جوکیروسین ڈیلرتھے 1992 سے قبل حیدرآباد میں اراضی خریدی تھی ۔ ان کے چچا پیدائشی دولتمندتھے اور حیدرآباد میں ان کی ایک اراضی ہے ۔ ان کے مکان کے کرایہ دار نے کمپنی قائم کی ہے ۔ ٹی آرایس قائدین اس کمپنی کو میری ملکیت قرار دے کر افواہ پھیلا رہے ہیں۔ ریڈی نے نگرانکار چیف منسٹر کے سی آر کو چیالنج کیاکہ وہ اقتدار پرآنے سے قبل اوراقتدارپرآنے کے بعد کیا اپنی اور اپنے خاندان کی جائیدادکی برسرخدمت جج کے ذریعہ تحقیقات کرنے تیار ہیں؟۔انہوں نے کے چندرشیکھررائو کو ذہنی طورپربیمار قرار دیتے ہوئے کہاکہ ٹی آرایس قائدین جو ان پرتنقیدیںکررہے ہیں ‘دراصل کے سی آر کے پالتو جانوروںکے مانندہیں جوان کی پھینکی ہوئی ہڈیوںپرگزربسرکرتے ہیں۔

جواب چھوڑیں