سعودی عرب کی خودمختاری میں مداخلت کیخلاف انتباہ :عادل الجبیر

سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کا کہنا ہے کہ “مملکتِ سعودی عرب کی سیادت اور خود مختاری ایک سرخ لکیر ہے اور ہم اپنے امور میں مداخلت ہر گز قبول نہیں کریں گے۔کل نیویارک میں اقوام متحدہ میں خطاب کے دوران الجبیر نے کہا کہ قطر کا بائیکاٹ سعودی عرب اور اس کے حلیفوں کی جانب سے انسداد دہشت گردی کی کوششوں کا حصّہ ہے۔انہوں نے ایران کا مقابلہ کرنے کے سلسلہ میں امریکی حکمت عملی کے لیے سعودی عرب کی سپورٹ کو باور کرایا۔ سعود وزیر خارجہ کے مطابق تہران کی دہشت گرد سرگرمیاں ابھی تک خطّے کو عدم استحکام سے دوچار کر رہی ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم ایک بار پھر انسداد دہشت گردی کے سلسلے میں بین الاقوامی تعاون کو بڑھانے پر زور دیتے ہیں۔ سعودی عرب کو یقین ہے کہ مشرق وسطی میں امن کو یقینی بنانے کے لیے ایران کو لگام دینے کی ضرورت ہے۔ خطّے میں ایران کا معاندانہ برتاؤ تمام تر بین الاقوامی منشوروں کی کھلی خلاف ورزی ہے”۔عادل الجبیر نے سعودی عرب کے اس موقف کو دہرایا کہ وہ تین بنیادوں پر یمن میں سیاسی حل کے موقف پر کاربند ہے۔ انہوں نے کہا کہ یمن میں تمام تر انسانی کارروائیاں پیش کرنے اور انہیں آسان بنانے کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔ الجبیر کے مطابق گزشتہ چار برسوں کے دوران سعودی عرب نے یمن کو 13 ارب ڈالر کی مدد پیش کی۔سعودی وزیر خارجہ کے مطابق ایران نواز دہشت گرد حوثی ملیشیا کی جانب سے سعودی عرب پر میزائلوں کے داغے جانے کا سلسلہ جاری ہے اور اب تک مملکت پر 199 میزائل داغے جا چکے ہیں۔عادل الجبیر نے باور کرایا کہ مسئلہ فلسطین سعودی عرب اور اسلامی دنیا کا مرکزی معاملہ رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ 1967ء کی سرحد پر ایک خود مختار فلسطینی ریاست کا قیام جس کا دارالحکومت مشرقی بیت المقدس ہو ‘ یہ فلسطینیوں کا حق ہے۔اسی طرح سعودی وزیر نے باور کرایا کہ “مملکت سعودی عرب لیبیا میں قانونی فریق کے ساتھ کھڑا ہے۔ سعودی عرب اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی غسان سلامہ کی کوششوں کو سپورٹ کرتا ہے اور لیبیا کی وحدت برقرار رکھنے پر زور دیتا ہے”۔ سعودی وزیر داخلہ کے مطابق ان کی حکومت نے انسان کو ترقی کا محور بنا دیا ہے اور ویڑن 2030 پروگرام کے ذریعے اپنے شہریوں کے لیے مستقبل کے دروازے کھول دیے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ سعودی عرب کا پیغام سچّی شراکت داری پر مبنی ہے تا کہ آنے والی نسلیں امن کے ساتھ زندگی گزار سکیں۔

جواب چھوڑیں