جموں وکشمیر میں ایک اور فوجی نے خودکشی کرلی

وسطی کشمیر کے ضلع گاندربل میں گذشتہ رات سشستر سیما بل (ایس ایس بی) کے ایک اہلکار نے اپنے کیمپ میں اپنی سروس رائفل سے خود پر گولی چلاکر خودکشی کرلی۔ یہ جموں وکشمیر میں گزشتہ دو دنوں کے دوران کسی سیکورٹی فورس اہلکار کی خودکشی کا دوسرا واقعہ ہے ۔اس سے قبل 29 اور 30 ستمبر کی درمیانی رات کے دوران ضلع راجوری کے سندر بنی میں واقع بی ایس ایف کیمپ میں تعینات بی ایس ایف ہیڈ کانسٹیبل رام چرن نے اپنی سروس رائفل سے خود پر گولی چلاکر خودکشی کی۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ وسطی کشمیر کے ضلع گاندربل کے دگنی بل علاقہ میں قائم 13 بٹالین ایس ایس بی کیمپ میں تعینات انسپکٹر گٹی لال ولد کے کے رام ساکنہ اکھنور جموں نے مبینہ طور پر گزشتہ رات اپنی سروس رائفل سے خود پر گولی چلائی۔ انہوں نے بتایا کہ مذکورہ بی ایس ایف اہلکار کو اپنے ساتھیوں نے فوری طور پر نذدیکی اسپتال منتقل کیا لیکن وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ چکا تھا۔ پولیس نے بتایا کہ فوری طور پر یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ مذکورہ ایس ایس بی جوان نے خودکشی کا قدم کیوں اٹھایا۔ انہوں نے بتایا ‘ہم نے معاملہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے ‘۔ پولیس ذرائع نے مزید بتایا کہ قانونی اور طبی لوازمات کی ادائیگی کے بعد مہلوک فوجی اہلکار کی لاش اس کے آبائی گھر بھیجی جائے گی۔ یہ بات یہاں قابل ذکر ہے کہ سیکورٹی اداروں کی جانب سے یوگا اور آرٹ آف لیونگ کی سرگرمیاں متعارف کرانے کے باوجود جموں وکشمیر میں تعینات سیکورٹی فورس اہلکاروں میں خودکشی کے رجحان میں کوئی کمی نہیں آرہی ہے ۔ ایک رپورٹ کے مطابق ملک بھر میں سال 2009 سے لیکر اب تک کم از کم 1100 سیکورٹی فورس اہلکاروں نے خودکشی کی ہے ۔

جواب چھوڑیں