عراق میں صدارتی منصب کی خاتون امیدوار کو دھمکیوں کا سامنا

کردستان الائنس سے تعلق رکھنے والی سابق رکن پارلیمنٹ اور عراقی صدارتی امیدوار سروہ عبدالواحد کا کہنا ہے کہ انہیں دست بردار ہونے کے لیے دھمکیوں کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ یہ پیش رفت عراقی پارلیمنٹ کے اْس اجلاس سے قبل سامنے آئی ہے جس میں ملک کے صدر کے چناؤ کو زیر بحث لایا جائے گا۔ اتوار کے روز اپنی ایک ٹوئیٹ میں سروہ نے مزید لکھا کہ ان کی نامزدگی سیاسی جماعتوں کے فیصلے نہیں ہوئی کہ وہ ان جماعتوں کی طرف سے دست برداری کے مطالبے کے آگے جھک جائیں۔ سروہ نے واضح کیا کہ وہ اپنے فیصلے پر قائم ہیں اور صدارت کی دوڑ سے ہر گز دست بردار نہیں ہوں گی۔ادھر سیاسی ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ سابق وزیراعظم نوری المالکی کے زیر قیادت اسٹیٹ آف لاء الائنس نے صدر کے منصب کے لیے کردستان نیشنل یونین کے نامزد امیدوار برہم صالح کی حمایت کا فیصلہ کیا ہے۔ المالکی نے الائنس کی میٹنگ میں آئندہ حکومت کے ساتھ تعاون کی ضرورت پر زور دیا تا کہ ہتھیاروں کو ریاست کے ہاتھوں تک محدود کیا جا سکے۔ کردستان ڈیموکریٹک پارٹی کا ایک وفد اتوار کے روز بغداد پہنچا ہے۔

جواب چھوڑیں