تلنگانہ اسمبلی انتخابات ‘مداخلت کرنے سے سپریم کورٹ کا انکار

ملک کی اعلیٰ ترین عدالت سپریم کورٹ نے تلنگانہ میں منعقد شدنی اسمبلی انتخابات میں مداخلت کرنے سے انکار کردیا۔ ایک ایسے وقت جب الیکشن کمیشن کی جانب سے تلنگانہ میں انتخابات کے انعقاد کے عمل کے لئے انتظامات میں تیزی لائی جارہی ہے تب سپریم کورٹ نے حیدرآباد ہائی کورٹ کو انتخابات سے مربوط امور‘ فہرست رائے دہندگان اور رائے دہندوں کے ناموں کے اخراج کے موضوع پر جمعہ کو سماعت کرنے کی ہدایت دی۔ اس فیصلہ کی اہمیت اس لئے بھی بڑھ جاتی ہے کیونکہ تلنگانہ میں فہرست رائے دہندگان و انتخابات سے جڑے امور کو درست کرنے کے لئے تاریخ میں توسیع کرنے کی خواہش کی گئی تھی۔ دوسری طرف الیکشن کمیشن کی جانب سے فہرست رائے دہندگان کے قطعی مسودہ کو اکتوبر کے پہلے ہفتہ میں شائع کردیا گیا۔ ہائی کورٹ کی جانب سے جمعہ کو اس عرضی پر سماعت کی جائے گی اور توقع ہے کہ فرضی ووٹرس (بوگس) کے ناموں کو فہرست رائے دہندگان سے حذف کرنے کے موضوع پر فیصلہ صادر کردیا جائے گا۔ سپریم کورٹ نے آج ایک درخواست گذارو کانگریس قائد ششی دھر ریڈی کی جانب سے فہرست رائے دہندگان سے لاکھوں ناموں کے اخراج پر داخل کردہ عرضی کی سماعت کرتے ہوئے درخواست گزار کو ہدایت دی کہ وہ اس مسئلہ کو ہائی کورٹ سے رجوع کریں۔ سپریم کورٹ نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہائی کورٹ میں پہلے ہی اس طرح کی عرضیوں کی سماعت جاری ہے اور احساس ظاہر کیا کہ اس مسئلہ پر ریاستی سطح پر ہی سماعت کی جانی چاہئے۔ درخواست گزار نے عدالت سے اپیل کی تھی‘ نئے رائے دہندوں کو فہرست رائے دہندگان میں ناموں کے اندراج کا موقع فراہم کرنے کے لئے تواریخ میں توسیع کی جائے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ ریاستی ہائی کورٹ کو اختیار ہے کہ وہ قواعد کے مطابق فیصلہ کرتے ہوئے مسئلہ کو حل کرے۔

جواب چھوڑیں