تنوشری کو ناناپاٹیکر اور وویک اگنی ہوتری کی قانونی نوٹس

 اداکارہ تنوشری دتہ کو سینئراداکار نانا پاٹیکر اور فلمساز وویک اگنی ہوتری کی طرف سے دو قانونی نوٹسیں وصول ہوئی ہیں۔ اداکارہ کا کہنا ہے کہ یہ ہندوستان میں ہراسانی، تذلیل اور ناانصافی کے خلاف آواز اٹھانے کی قیمت ہے۔ تنوشری نے اپنے بیان میں کہا کہ ’’مجھے آج دو قانونی نوٹسیں موصول ہوئی ہیں۔ ایک نانا پاٹیکر اور دوسری وویک اگنی ہوتری کی طرف سے۔ ہندوستان میں ہراسانی، توہین اور ناانصافی کے خلاف بولنے پر آپ کو یہ قیمت ادا کرنا پڑتی ہے۔‘‘ سابق ملکہ حسن نے کہا کہ ناناپاٹیکر اور اگنی ہوتری کی ٹیمیں ‘ سوشل میڈیا پر جھوٹ گڑھ کے اورجھوٹی خبریں پھیلاکر میرے خلاف رسواکن مہم چلارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ’’آج جب میں گھر پر تھی اور گھر کے باہر تعینات پولیس اہلکار دوپہر کے کھانے پر گیا تھا، دو نامعلوم مشتبہ افراد نے میرے گھر میں داخل ہونے کی کوشش کی مگر عمارت کے سیکورٹی اہلکار نے انہیں بروقت روک دیا۔ بعد ازاں پولیس واپس آئی اور دوبارہ حفاظت پر تعینات ہوئی۔ مہاراشٹرا نونرمان سینا (ایم این ایس) پارٹی مجھے پُرتشدد دھمکیاں دے رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے عدالت میں گھسیٹنے کی دھمکی دی جارہی ہے اور ہندوستان کے عدالتی نظام سے ہم واقف ہیں کہ یہ خاتون، اس کے حامیوں اور میڈیا کو ’’معاملہ عدالت میں ہونے‘‘ کے بہانے خاموش رکھتا ہے ۔ اتنا ہی بلکہ اسے خاتون کو مزید ہراساں کرنے اور اسے مالی طور پر کنگال کرنے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ ‘‘ تنوشری کا احساس ہے کہ ’’انصاف کی صبح کبھی نہیں ہوتی۔ عدالتی معاملات کسی نتیجہ کی امید کے بغیر دہائیوں تک چل سکتے ہیں۔

جواب چھوڑیں