مسلم لڑکیوں میں ترک تعلیم کی شرح گھٹ گئی:مختارنقوی

 مرکزی وزیر اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے جمعہ کے دن کہا کہ بی جے پی زیرقیادت این ڈی اے حکومت نے جو اقلیتوں کی خوشامد کی پالیسی کے خلاف ہے‘ ملک میں ترقی کے معاملہ میں علاقائی اورسماجی عدم توازن دور کردیا ہے۔ نقوی نے یہاں مختلف ریاستوں کے وزرا ‘ پرنسپل سکریٹریز ‘ سکریٹریز انچارج سوشل ویلفیر‘ مائناریٹی ویلفیر کے زونل کوآرڈینیشن اجلاس سے خطاب میں یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ مرکز نے ووٹ بینک سیاست کا خاتمہ کردیا ہے۔ اس کے بجائے اس نے قوم پرست سیاست کی ہے۔ نقوی نے کہا کہ اقلیتوں بالخصوص مسلم لڑکیوں میں ترک تعلیم کی شرح جو پہلے 70 فیصد سے زائد تھی‘ اب گھٹ کر لگ بھگ 35-40 فیصد ہوگئی ہے۔ مختلف تعلیمی بیداری پروگراموں کی بدولت یہ ممکن ہوا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہماری حکومت کا نشانہ اسے مزید گھٹاکر صفر تک لانے کا ہے۔ آسام کے چیف منسٹر شربانند سونووال اجلاس میں موجود تھے۔

جواب چھوڑیں