امریکی پابندیوں کے باوجود ‘ہندوستان ‘ایران سے تیل خریدے گا

 ہندوستان ‘اسلامی جمہوریہ سے خام تیل کی خرید کا سلسلہ جاری رکھے گا۔ ایرانی آئل کارپوریشن نومبر میں 6 ملین بیرل خام تیل منگلور ریفائنری کو روانہ کرے گی جب کہ تین ملین بیرل تیل پیٹرو کیمیکل لمیٹڈ کو فراہم کیا جائے گا۔ دوسری جانب امکان ظاہر کیا گیا ہے کہ امریکی صدر کی انتظامیہ بعض ممالک کو استثنیٰ دینے پر غور بھی کر رہی ہے۔ ہندوستانی حکومتی ذرائع نے نام مخفی رکھنے کی شرط پر نیوز ایجنسی رائٹر کو بتایا ہے کہ نئی دہلی حکومت نومبر میں ایران سے 9 ملین بیرل تیل خریدے گا۔ ان ذرائع نے ایسے اشارے بھی دیے ہیں کہ 4 نومبر سے ایرانی تیل کی خرید پر لگنے والی امریکی پابندی کے باوجودہندوستان اگلے ماہ نومبر کے دوران ایران سے 9 ملین بیرل تیل خریدنے کی منصوبہ بندی کیے ہوئے ہے۔ دوسری جانب امریکہ کی جانب سے ایرانی تیل کی فروخت پر 4 نومبر کو پابندیاں عائد ہو جائیں گی۔ امریکہ کی جانب سے ایران پر اقتصادی پابندیوں کا دوسرا مرحلہ چار نومبر سے شروع ہو گا اور اس دن ایرانی تیل کی فروخت کو روکنے کی پابندی عائد ہو جائیں گی۔ امریکہ کی کوشش ہے کہ ایرانی تیل کی فروخت کو صفر کے مقام پر لایا جائے تا کہ ایران معاشی دباؤ تلے آ کر ایک مرتبہ پھر عالمی طاقتوں کے ساتھ مذاکراتی سلسلے کو شروع کرے۔دوسری جانب امریکہ کے قریبی اتحادی ملک ہندوستان نے اگلے ماہ ایران سے لاکھوں بیرل خام تیل خریدنے کی پلاننگ کر رکھی ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ 4 نومبر کے بعد ہندوستان اپنے کلیدی اسٹریٹیجیک بین الاقوامی پارٹنر امریکہ کے ساتھ ساتھ انرجی پارٹنر ملک ایران کے ساتھ تعلقات میں تعاون کیونکر اور کیسے پیدا کرے گا۔نئی دہلی حکومت کو یقین ہے کہ اْسے امریکہ کی جانب سے ایرانی تیل خریدنے پر خصوصی رعایت حاصل ہو جائے گی۔ دوسری جانب واشنگٹن میں حکومتی حلقوں نے امکان ظاہر کیا ہے کہ موجودہ امریکی صدر ٹرمپ کی انتظامیہ بعض ایسے ممالک کو استثنیٰ دینے پر غور کر رہی ہے، جو ایرانی تیل کی خرید میں بتدریج کمی لاتے جائیں گے۔ہندوستان کو ایران کی جانب سے رواں برس نومبر میں 9ملین بیرل تیل فراہم کیا جائے گاامریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے بھی گزشتہ ماہ ہندوستانی دورہ کے دوران کہا تھا کہ ٹرمپ انتظامیہ ایرانی تیل کے خریدار ہندوستان جیسے دیگر ممالک کو رعایتیں دینے پر غور کر سکتی ہے لیکن انہیں اس خرید کے عمل کو ایک پلان کے تحت زیرو کی سطح پر لانا ہو گا۔

جواب چھوڑیں