تلنگانہ انسداد سنگین جرائم بل کو صدرجمہوریہ کی منظوری

صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے اُس بل کو منظوری دے دی جس کی مدد سے تلنگانہ میں جنسی زیادتیوں اور سائبر جرائم کے مجرمین اور روایتی غیر قانونی سرگرمیوں جیسے شراب کے غیر مجاز کاروبار اور ڈکیتی میں ملوث عناصر سے نمٹنے میں مدد ملے گی ۔ تلنگانہ انسداد سنگین جرائم سرگرمیوں سے متعلق بل کو صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے منظوری دی ہے ۔ اس بل کے تحت شراب کی غیر قانونی تجارت، ڈکیتی، ڈرگس کے ملزمین ، غنڈہ گردی، انسانوں کی غیر مجاز منتقلی اور لینڈ گرابرس کے واقعات میں ملوث عناصر کے ساتھ نمٹا جاسکے گا ۔ تلنگانہ انسداد سنگین جرائم سرگرمیوں سے متعلق مرممہ بل 2017 ،1986 کے قانون کی جگہ لے گی۔ یہ قانون متحدہ آندھرا پردیش میںلاگو تھا لیکن اس کے تحت موجودہ حالات میں سفید پوش مجرمین یا مالیاتی دھوکہ بازو کو سزا نہیں دی جاسکتی تھی ۔ صدر جمہوریہ نے تلنگانہ انسداد سنگین جرائم سرگرمیوں سے متعلق مرممہ 2017 بل کو منظوری دی ہے ۔ وزارت داخلہ کے ایک سینئر عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی زیر قیادت ٹی آر ایس حکومت نے یہ قانون بنایا ہے جنہیں اب ریاست میں اسمبلی انتخابات کا سامنا ہے۔اس مرممہ قانون کے تحت جنسی ہراسانی کے واقعات میں ملوث افراد، دھماکو اشیاء منتقل کرنے والے مجرمین، ہتھیاروں کے اسمگلرس ، سائبر فراڈرس، اور سفید پوش جرائم میں ملوث افراد یا مالیاتی دھوکہ بازو کو سخت سزا دی جاسکے گی ۔ عہدیدارنے یہ بات بتائی ۔ اس مرممہ قانون کے تحت حکومت تلنگانہ نے نقلی تخم ، غیر معیاری جراثیم کش ادویات اور نقلی کھاد کی فروخت، غذائی اشیاء میں ملاوٹ، جعلی دستاویزات کی تیاری، جنگلاتی پراڈکٹس کی غیر مجازد فروخت، اور سٹہ یا قمار بازی کو مستوجب سزا قرار دیا ہے ۔ اس قانون کے تحت عام اور روایتی جرائم کی سنگین سرگرمیوں جیسے شراب کی غیر مجاز فروخت، ڈکیتی، ڈرگس کا کاروبار، انسانوں کی غیر قانونی منتقلی، اور اراضیات پر قبضہ جات ( لینڈ گرابرس) کے واقعات میں ملوث افراد کو سزا دلائی جاسکے گی ۔ قدیم قانون میں سائبر فراڈ کو روکنے ، جنسی ہراسانی، آن لائن سٹہ بازی، اور جعلی اسناد کی تیاری جیسے واقعات میں ملوث افراد کو سزا دلانے کی گنجائش کم تھی۔ اس مرممہ قانون سے ان تمام جرائم میں ملوث افراد کے ساتھ آسانی کے ساتھ نمٹا جاسکے گا۔

جواب چھوڑیں