سنٹرل یونیورسٹی کے طلبہ یونین انتخابات‘ اے بی وی پی کی کامیابی

بی جے پی کی طلبہ تنظیم اے بی وی پی ( اکھیل بھارتیہ ودیارتھی پریشد) نے 8 سال کے عرصہ کے بعد یونیورسٹی آف حیدرآباد( یو او ایچ) کے اسٹوڈنٹ یونین کے انتخابات 2018-19 میں6، اعلیٰ عہدوں پر شاندار کامیابی درج کرائی ہے ان انتخابات میں اے بی وی پی نے او بی سی ایف ( ادر بیاک ورڈ کلاسس فیڈریشن) اور سیوالال ودیارتھی دل ( ایس ایل و ڈی ) کے ساتھ مشترکہ طور پر حصہ لیتے ہوئے ٹاپ6 عہدوں پر قبضہ کرلیا ۔ ان 6 اعلیٰ عہدوں میں صدر، نائب صدر، جنرل سکریٹری ، جوائنٹ سکریٹری اور کلچرل سکریٹری کے عہدے شامل ہیں۔ 5؍ اکتوبر کو منعقدہ انتخابات کے نتائج ہفتہ کو رات دیر گئے جاری کئے گئے۔ 8 سال کے طویل وقفہ کے بعد اے بی وی پی نے یونیورسٹی آف حیدرآباد جسے حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی بھی کہا جاتا ہے ، کے طلبہ یونین کے انتخابات میں شاندار فتح حاصل کی ہے ۔ ان انتخابات میں اسٹوڈنٹس فیڈریشن آف انڈیا، اے بی وی پی، او بی سی ایف ۔ ایس ایل وی ڈی اور یونائیڈ ڈیمو کریٹک الائنس، بہوجن اسٹوڈنٹس فرنٹ، دلت اسٹوڈنٹس یونین اور این ایس یو آئی کے درمیان سخت مقابلہ دیکھا گیا۔ یونیورسٹی آف حیدرآباد کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ میں بتایا گیا ہے کہ طلبہ یونین کے انتخابات میں تقریباً3,900 طلبہ نے حق رائے دہی سے استفادہ کیا ۔8 سال کے طویل وقفہ کے بعد اے بی وی پی نے حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی کے اسٹوڈنٹس یونین کے انتخابات میں کامیابی حاصل کی ہے ۔ تلنگانہ اے بی وی پی کے رکن سشیل نے یہ بات بتائی ۔ اے بی وی پی ۔ او بی سی ایف اور ایس ایل وی ڈی کے مشترکہ امیدوار و پی ایچ ڈی اسکالر آر تی ناگپال نے کی صدارتی نشست پر قبضہ کرلیا جبکہ نائب صدر کے عہدہ کیلئے امیت کمار منتخب ہوئے ہیں اسی طرح جنرل سکریٹری کے عہدہ پر دھیراج سنگھوی کا انتخاب عمل میں آیا جبکہ پروین کمار کو جوائنٹ سکریٹری کے عہدہ پر منتخب قرار دیا گیا ۔ کلچرل سکریٹری اور اسپورٹس سکریٹری کے عہدوں پر بالترتیب ارویند ایس کمار، اور نکھیل راج کے ، منتخب ہوئے ہیں۔ ان انتخابات میں ایس ایف آئی ، امبیڈکر اسٹوڈنٹس اسوسی ایشن ، دلت اسٹوڈنٹس یونین اور دیگر گروپ پر مشتمل الائنس فار سوشل جسٹس کا صفایا ہوگیا ۔

جواب چھوڑیں