انٹرپول کا لاپتہ سربراہ چین میں گرفتار‘ عہدہ سے مستعفی

بین الاقوامی پولیس انٹرپول کے کئی دنوں سے لاپتہ اور اب سابق سربراہ مینگ ہونگ وے چین میں ملکی حکام کی حراست میں ہیں اور ان کے خلاف رشوت خوری کے الزام میں تفتیش جاری ہے۔ یہ بات چینی وزارت برائے عوامی سلامتی نے بتائی۔چینی دارالحکومت بیجنگ سے پیر آٹھ اکتوبر کو ملنے والی نیوز ایجنسی رائٹر کی رپورٹوں کے مطابق چین کی وزارت برائے عوامی سلامتی نے اپنی ویب سائٹ پر آج بتایا کہ مینگ ہونگ وے، جو فرانس میں قائم بین الاقوامی پولیس ادارے انٹرپول کے سربراہ بھی تھے، چینی حکام کی تحویل میں ہیں اور ان سے چینی قوانین کی خلاف ورزیوں اور رشوت ستانی کے الزامات کے تحت پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔قبل ازیں کل اتوار سات اکتوبر کو اسی چینی وزارت نے یہ اعلان بھی کیا تھا کہ مینگ ہونگ وے نے انٹرپول کے سربراہ کے طور پر اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ مینگ ہونگ وے، جو ایک چینی شہری ہیں، انٹرپول کے سربراہ ہونے کے علاوہ چین میں پبلک سکیورٹی کی وزارت کے نائب وزیر بھی ہیں۔ اس چینی وزارت نے یہ نہیں بتایا کہ آیا وہ ابھی تک نائب وزیر کے عہدے پر فائز ہیں یا انہوں نے اپنے اس عہدے سے بھی استعفیٰ دے دیا ہے یا انہیں برطرف کر دیا گیا ہے۔چین کی پبلک سکیورٹی کی وزارت کی ویب سائٹ پر جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے، ’’مینگ ہونگ وے کے خلاف رشوت لینے اور ملکی قوانین کی خلاف ورزیوں کے شبے میں چھان بین کی جا رہی ہے۔ ایسا بالکل درست وقت پر اور قطعی دانش مندانہ اقدام سمجھ کر کیا جا رہا ہے۔‘‘

جواب چھوڑیں