کشمیر میں مجالس مقامی الیکشن‘ صرف 8.3 فیصد پولنگ

 عسکریت پسندی سے متاثرہ وادی کشمیر میں پیر کے دن شہری مجالس مقامی انتخابات کے پہلے مرحلہ میں صرف 8.3 فیصد رائے دہندوں نے ووٹ ڈالا جبکہ کارگل میں رائے دہی کا تناسب بہت زیادہ یعنی 78 فیصد رہا۔ ایک عہدیدار نے یہ بات بتائی۔ سخت سیکوریٹی میں پولنگ وادی کے 83 وارڈس میں صبح 7 بجے شروع ہوئی اور 4 بجے اختتام کو پہنچی ۔ 84,692 کے منجملہ صرف 7,057 رائے دہندے ووٹ ڈالنے آئے۔ پولنگ بڑی حد تک پرامن رہی۔ جموں وکشمیر میں شہری مجالس مقامی کے لئے الیکشن 4 مرحلوں میں ہورہا ہے۔ پہلا مرحلہ آج مکمل ہوگیا۔ کارگل اور لیہہ میں بھاری پولنگ ہوئی۔ کارگل میں رائے دہی کا تناسب 78 فیصد اور لیہہ میں 52 فیصد رہا۔ شمالی کشمیر میں کپواڑہ میونسپل کمیٹی میں 36.6 فیصد ووٹنگ ہوئی جبکہ ہندواڑہ میونسپل کمیٹی میں رائے دہی کا تناسب 27.8 فیصد رہا۔ سری نگر میونسپل کارپوریشن کے 3 وارڈس میں 30,074 ووٹرس ہیں۔ صرف 1862 رائے دہندے ووٹ ڈالنے گھروں سے باہر نکلے۔ پولنگ اسٹیشنوں پر کڑا پہرہ تھا۔ بڈگام میں 17 فیصد‘ اننت ناگ میں 7.3 فیصد‘ بارہمولہ میں 7.5 فیصد اور باندی پورہ میں صرف 3.3 فیصد رائے دہی ہوئی۔ وادی میں پیر کے دن صرف 83 وارڈس کے لئے پولنگ ہوئی کیونکہ 69 پر بلامقابلہ انتخاب عمل میں آچکا ہے۔

جواب چھوڑیں