ایم جے اکبر‘ مستعفی ہوجائیں۔مودی حکومت ‘ تحقیقات کیوں نہیں کراتی؟: کانگریس

جنسی ہراسانی کے معاملہ میں مملکتی وزیر خارجہ ایم جے اکبر پر تنقید جاری رکھتے ہوئے کانگریس نے چہارشنبہ کے دن کہا کہ وہ یا تو ان پر عائد الزامات کی وضاحت کریں یا اپنے عہدہ سے مستعفی ہوجائیں ۔ پارٹی نے جونیر وزیر کے خلاف الزامات کی تحقیقات کا بھی مطالبہ کیا۔ نئی دہلی میں اخباری نمائندوں سے بات چیت میں اے آئی سی سی ترجمان جئے پال ریڈی نے کہا کہ مرکزی وزیر ایم جے اکبر یا تو اطمینان بخش جواب دیں یا مستعفی ہوجائیں۔ ذمہ دار صحافیوں کے ایسے سنگین الزامات کے بعد وہ وزارت میں کیسے برقرار رہ سکتے ہیں۔ ہم معاملہ کی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہیں۔ کانگریس نے وزیر خارجہ سشما سوراج کی خاموشی پر بھی سوال اٹھایا۔ اے آئی سی سی ترجمان پرینکا چترویدی نے کہا کہ بدبختی کی بات ہے کہ وزیر خارجہ سشما سوراج نے خاموش رہنا پسند کیا ہے ۔ حکومت اور برسراقتدار جماعت کی خاموشی سے بی جے پی کا مخالف خواتین رویہ جھلکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرا ماننا ہے کہ بی جے پی ترجمانوں سے کہہ دیا گیا ہے کہ وہ اس مسئلہ پر تبصرہ نہ کریں۔ انہوں نے بی جے پی رکن پارلیمنٹ ادت راج کے ان ریمارکس کی بھی مذمت کی کہ می ٹو موومنٹ‘ ملک میں غلط رواج کی شروعات ہے اور عورتیں دو چار لاکھ کے لئے ایسے الزامات لگاتی رہتی ہیں۔

جواب چھوڑیں