جالندھر میں انصار غزوۃ الہند کا دہشت گرد ماڈیول بے نقاب

 پنجاب پولیس اور جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشنس گروپ (ایس او جی) نے چہارشنبہ کے دن جالندھر میں 3 طلبا کو گرفتار کیا اور کشمیری دہشت گرد تنظیم انصار غزوۃ الہند کا دہشت گرد ماڈیول بے نقاب کیا۔ یہ طلبا‘ جالندھر کے مضافات شاہ پور میں واقع سی ٹی انسٹی ٹیوٹ آف انجینئرنگ اینڈ ٹکنالوجی کے ہاسٹل سے پکڑے گئے۔ ڈائرکٹر جنرل پولیس سریش اروڑہ نے ایک بیان میں یہ بات بتائی۔ مشترکہ ٹیم نے جس نے صبح ہاسٹل پر دھاوا کیا‘ بی ٹیک (سیول) سیکنڈ سیمسٹر کے طالب علم زاہد گلزار (راج پورہ) کے کمرہ سے 2 ہتھیار بشمول ایک اسالٹ رائفل اور دھماکو اشیا برآمد کیں۔ زاہد کو پلوامہ کے محمد ادریس شاہ عرف ندیم اور نور پورہ (پلوامہ) کے یوسف رفیق بھٹ کے ساتھ پکڑلیا گیا۔ یہاں یہ تذکرہ ضروری ہے کہ شوپیان کے غازی احمد ملک کو حال میں پنجاب پولیس نے بانور (پٹیالہ) سے پکڑا تھا جہاں وہ آرینس گروپ پالی ٹیکنک میں پڑھ رہا تھا۔ پتہ چلا ہے کہ غازی ‘ عادل بشیر شیخ سے جڑا تھا۔ عادل بشیر شیخ ‘ جموں وکشمیر کا ایس پی او تھا جو سری نگر میں پی ڈی پی رکن اسمبلی کے بنگلہ سے 7 رائفلس کے ساتھ فرار ہوگیا تھا۔ شبہ ہے کہ وہ حزب المجاہدین میں شامل ہوگیا۔

جواب چھوڑیں