رائے بریلی میں ٹرین حادثہ‘ 7 مسافر ہلاک

نئی دہلی جانے والی نیو فراکا ایکسپریس ٹرین کے 9 ڈبے اور انجن رائے بریلی کے قریب چہارشنبہ کی صبح پٹری سے اترگئے۔ کم ازکم 7 افراد ہلاک اور 9 شدید زخمی ہوئے۔ اترپردیش پولیس نے یہ بات بتائی۔ نیو فراکا ایکسپریس (14003) مالدہ(مغربی بنگال) سے نئی دہلی آرہی تھی کہ ضلع رائے بریلی کے ہرچند پور علاقہ میں صبح 6:10 بجے حادثہ کا شکار ہوگئی۔ اترپردیش کے ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل پولیس(نظم وضبط ) آنند کمار نے یہ بات بتائی۔ انہوں نے کہا کہ 30 تا 35 مسافرین کو معمولی زخم آئے ہیں۔ ریلویز کا تاہم کہنا ہے کہ 5 جانیں گئی ہیں جن میں 3 مرد اور 2 عورتیں شامل ہیں۔ 19 مسافرین زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں میں 10 عورتیں اور 6 بچے شامل ہیں۔ ریلوے عہدیداروں نے یہ بات بتائی۔ شدید زخمیوں میں 4کا علاج لکھنو کے کنگ جارج میڈیکل یونیورسٹی ہاسپٹل کے ٹراما سنٹر میں چل رہا ہے جبکہ 2 کو شہرکے سنجے گاندھی پوسٹ گریجویٹ انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسس میں شریک کرایا گیا ہے۔حکومت اترپردیش کے ترجمان سری کانت شرما نے میڈیا نمائندوں کو یہ بات بتائی۔ دیگر زخمیوں کو رائے بریلی لے جایا گیا۔ رائے بریلی ریاستی دارالحکومت لکھنو سے لگ بھگ 80 کیلو میٹر کے فاصلہ پر واقع ہے۔ پھنسے مسافرین کے لئے ایک خصوصی ٹرین کا انتظام کیا گیا جو 1369 مسافرین کو لے کر لکھنو سے 2:45 بجے دن نئی دہلی روانہ ہوگئی۔ ان مسافرین کو غذائی پیاکٹس دیئے گئے۔ وزیر ریلوے پیوش گوئل نے مہلوکین کے ورثا کو فی کس 5 لاکھ روپے ‘ زخمیوں کو ایک لاکھ روپے اور معمولی زخمیوں کو 50 ہزار روپے فی کس معاوضہ کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ انکوائری کا حکم دے دیا گیا ہے اور یہ انکوائری کمشنر آف ریلوے سیفٹی ناردرن سرکل کے ذمہ ہوگی۔ چیف منسٹر یوپی یوگی آدتیہ ناتھ نے مرنے والوں کے ورثا کو فی کس 2 لاکھ روپے اور شدید زخمیوں کو فی کس 50 ہزار روپے معاوضہ کا اعلان کیا۔ صدرنشین ریلوے بورڈ اشوینی لوہانی مقام حادثہ پر پہنچ گئے ۔ انہوں نے رائے بریلی کے ہسپتالوں میں شریک زخمیوں سے بھی ملاقات کی۔ این ڈی آر ایف کی ایک ٹیم اور ریاستی حکومت اور ریلویز کے سینئر عہدیدار بھی مقام حادثہ پر پہنچے۔ ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل آنند کمار کے بموجب گاڑی پٹری سے کیوں اتری اس کا پتہ انسداد دہشت گردی اسکواڈ (اے ٹی ایس) کی برسرموقع تحقیقات کے بعد چلے گا۔ گاڑی پٹری سے اترنے کی تحقیقات چیف کمشنر ریلوے سیفٹی شیلیش پاٹھک کریں گے جو گذشتہ برس پوری۔ ہری دوار اُتکل ایکسپریس حادثہ کی بھی تحقیقات کرچکے ہیں۔ اتکل ایکسپریس حادثہ میں 22جانیں گئی تھیں۔ نیو فراکا ایکسپریس حادثہ میں ہلاکتوں کی تعداد پر سینئر پولیس اور ریلوے عہدیداروں میں الجھن رہی۔ ریلویز نے ہلاکتوں کی تعداد 5 بتائی جبکہ یوپی کے ایک سینئر پولیس عہدیدار نے ابتدا میں کہا تھا کہ 7 جانیں گئیں۔ ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل پولیس(نظم وضبط) آنند کمار نے صبح میڈیا سے کہا تھا کہ 7 افراد ہلاک اور 30 تا 35 زخمی ہوئے تاہم ناردرن ریلوے کے ڈیویژنل ریجنل منیجر ستیش کمار نے ہلاکتوں کی تعداد 5 بتائی۔ ریلوے عہدیدار نے بتایا کہ ابتدا میں کچھ الجھن تھی کیونکہ 2 زخمیوں کی حالت انتہائی نازک تھی۔ بعدازاں ربط پیدا کرنے پر آنند کمار نے مانا کہ تاحال 5 جانیں گئی ہیں۔ ٹرین کے کتنے ڈبے پٹری سے اترے اس پر بھی ایسی ہی الجھن رہی۔ ریلویز نے ابتدا میں9ڈبوں والی بات کہی تھی اور بعد میں اس نے یہ تعداد 5 بتائی۔ آئی اے این ایس کے بموجب مغربی بنگال کے مالدہ سے نئی دہلی جانے والی ایک ایکسپریس ٹرین اترپردیش کے رائے بریلی میں پٹری سے اترگئی۔ 6 افراد ہلاک ہوئے۔ وزیر ریلوے پیوش گوئل نے مرنے والوں کے ورثا کو فی کس 5 لاکھ روپے ایکس گریشیا کا اعلان کیا۔ ٹرین ہرچند پور کے قریب صبح لگ بھگ 6:05 بجے پٹری سے اتری۔ الٰہ آباد اور وارانسی سے پہنچنے والی نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس ٹیموں نے بچاؤ و راحت کاری میں حصہ لیا۔ ڈرون اور لانگ رینج کیمرے استعمال کئے گئے۔ ڈبوں سے نعشیں نکالنے ہیوی ڈیوٹی گیس کٹرس منگوائے گئے۔ حادثہ کے بعد کم ازکم 13 گاڑیوں کا رخ یا تو موڑدیا گیا یا انہیں منسوخ کردیا گیا۔

جواب چھوڑیں