سعودی عرب‘ ہندوستان کو 40لاکھ بیارل زائد تیل فراہم کرے گا

دنیا کا سب سے بڑا‘ تیل برآمد کنندہ ملک سعودی عرب ‘ہندوستانی خریداروں کو آئندہ ماہ نومبر میں 40لاکھ بیارل کروڈ آئیل زائد سپلائی کرے گا ۔ مذکورہ معاملت سے آگاہ متعدد ذرائع نے آج یہ بات بتائی۔ مذکورہ معتبر ذرائع سے پتہ چلتاہے کہ سعودی عرب‘ ایران سے تیل کی برآمدات پر امریکہ کی جانب سے تحدیدات عائد ہونے کی صورت میں ہونے والے کمی کی پابجائی کرنا چاہتاہے۔ (ایران‘ اوپیک ممالک کا تیسرا سب سے بڑا تیل پیدا کنندہ ملک ہے)۔ ایران کیخلاف امریکی تحدیدات آئندہ 4نومبرسے شروع ہونے والی ہیں۔ ہندوستان‘ چین کے بعد ایران کے تیل کا دوسرا سب سے بڑا خریدار ہے۔ اگرچہ کئی ریفائنریز نے اشارہ دیا ہے کہ تحدیدات کے سبب وہ ‘ ایرانی بیارلس لینا روک دیں گی‘ ریلائنس انڈسٹری لمیٹیڈ‘ ہندوستان پٹرولیم کارپوریشن ‘ بھارت پٹرولیم کارپوریشن اور منگلور ریفائنری پٹرول کیمیکلس لمیٹیڈ(ایم آر پی ایل)‘ میں سے ہر ایک کمپنی آئندہ ماہ نومبر میں سعودی عرب سے 10لاکھ بیارل زائد طلب کررہی ہیں۔ (اِس طرح بہ اعتبار مجموعی ہندوستان کو 40لاکھ بیارل کروڈ آئیل سپلائی ہوگا)۔رائٹر نے جب ای میل کے ذریعہ 3کمپنیوں سے‘ مذکورہ معاملہ کے بارے میں دریافت کیا تو اِن کمپنیوں نے فوری جواب نہیں دیا جبکہایم آر پی ایل نے جواب دیا ’’ کوئی تبصرہ نہیں ہوگا‘‘۔ سعودی حکومت کے زیر ملکیت آرامکو‘ سے جب رابطہ قائم کیا گیا تو کوئی فوری تبصرہ نہیں وصول ہوسکا۔ ایرانی آئیل سپلائز پر اپنے انحصار کو دیکھتے ہوئے ہندوستانی ریفائنرس مذکورہ تحدیدات شروع ہونے کی صورت میں ایرانی کروڈ آئیل کی عدم دستیابی کے بارے میں پریشان ہیں اور استثنیٰ طلب کررہے ہیں۔ ہندوستان کے ریفائنرس نے آئندہ نومبر میں 90لاکھ بیارل تیل‘ ایران سے خریدنے کیلئے آرڈرس دے دیئے ہیں۔ سعودی آئیل کی زائد طلب کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ امریکہ سے کروڈ کفالت بند ہے۔ اِس لئے ہندوستانی خریداروں کو تیل کیلئے مشرقی وسطی کی جانب دیکھنا پڑرہا ہے۔ ہندوستان‘ دنیا کا تیسرا سب سے بڑا تیل درآمد کنندہ ملک ہے اور وہ تیل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں اور مقامی کرنسی کی گرتی ہوئی قدر سے نبرد آزما ہے۔ اِس صورتحال کے سبب ڈالر غلبہ کی حامل تیل درآمداد مزید مہنگی ہوگئی ہے۔ ہندوستان میں گیسولین اور ڈیزل کی چلر قیمتوں میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے اور حکومت کو ‘ صارفین پر سے بارکو کسی حد تک کم کرنے کیلئے فیول پر اکسائز ٹیکس کم کرنا پڑا۔

جواب چھوڑیں