شٹلر سندھوکی جانب سے می ٹوتحریک کا خیرمقدم

ریو سلورمیڈلسٹ پی وی سندھونے آج ان لوگوں کی حوصلہ افزائی کی جن کامختلف شعبہ حیات سے تعلق ہے جنہوںنے ہراسانی کے بارے میں اظہارخیال کے لئے آگے آئے ہیں۔جبکہ سینئر شٹلرجوالا گٹہ نے خودکو اس بارے میں تبصرہ سے گریز کیاہے ۔ جنہوں نے ایک نامعلوم کوچ کی جانب سے ذہنی ہراسانی کا الزام عائد کیاتھا‘ میں ان لوگوںکی ستائش کرتی ہوں جو اس بارے میں اظہار خیال کے لئے آگے آئے ہیں ، میں ان کا احترام کرتی ہوں سندھونے یہ بات ووڈا فون ایونٹ کے دوران حاشیہ میں کہی۔جہاں ٹیلی کام کی قدآور کمپنی نے خواتین کے لئے خصوصی خدمات ’سکھی‘ کا آغاز کیاہے۔اگروہ اپنے کھیل کے دوران اس قسم واقعات سے واپس ہوتیں اس کی جانچ کی جاتی۔ حیدرآبادی لڑکی نے یہ بات کہی‘ٹھیک ہے میں سینئرس اورکوچس کے بارے میں کچھ نہیں جانتی اورجہاںتک میرا تعلق ہے تو میں ٹھیک ہوں اور میرے لئے بہتر ہے۔ سندھوکا تبصرہ2010کامن ویلتھ گیمس ویمنس ڈبلزگولڈ میڈلسٹ جوالاگٹہ کے تبصرہ کے بعد آیاہے جس میں انہوںنے کسی کانام نہیں لیا ، صرف کوچ کی جانب سے ذہنی ہراسانی کا الزام عائد کیاہے۔ ہوسکتاہے مجھے ذہنی ہراسانی کے بارے میں بات کرنی چاہئے اوراس بارے میں کوشش کرو ں گی 2006 سے جب یہ شخص چیف بناہے اس نے مجھے قومی چمپئن ہونے کے باوجود اس نے مجھے قومی ٹیم سے خارج کردیاتھاجبکہ وہ ریو اولمپکس سے واپس ہوئی تھی اورمیں قومی ٹیم سے پھر واپس کردی گئی اوراس کی یہی ایک وجہ تھی کہ میںنے کھیل کا سلسلہ ترک کردیا۔ یہ بات اس نے تحریر کی۔ لہذا جب یہ شخص مجھ سے ملتاہے اورمیری جوڑی دارکو دھمکی دیتا ہے اور مجھے ہراساں کرتا ہے لہذا میرے لئے الگ تھلگ ہوجانا ہی میرے لئے بہتر تھا جوالا نے یہ بات کہی۔

جواب چھوڑیں