چندرا بابو نائیڈو، موقع اور مفاد پرست سیاست داں۔ کے ٹی آر کا الزام

ریاستی وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو کو موقع پرست اور مفاد پرست سیاست داں قرار دیا ۔ آج صدر تلگودیشم پارٹی کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کے ٹی راما راؤ نے چندرا بابو نائیڈو کی جانب سے2014 میں کانگریس پارٹی کے متعلق تحریر کردہ ٹویٹس کو دہراتے ہوئے ان کے مبینہ دہرے معیار کو عوام کے سامنے پیش کرنے کی کوشش کی ہے ۔ نائیڈو نے 24مارچ 2014 کو ٹویٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کا مقصد ملک کو بدعنوان کانگریس سے پاک کرنا ہے اور مقصد کو حاصل کرنے کیلئے وہ ممکنہ کوشش کریں گے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ ہم سیاسی جماعتوں سے مفاہمت کے معاملہ میں قطعی مفاد پرست نہیں تھے ۔ اسی طرح چندرا بابو نائیڈو نے 26 اپریل2014 کو ٹویٹر پر تحریر کیا تھا کہ راہول گاندھی اور سونیا گاندھی کا تلنگانہ سے اظہار محبت کافی شرارتی محسوس ہوتا ہے ۔ انہوںنے راہول گاندھی اور سونیا گاندھی سے جاننا چاہا تھا کہ وہ آخری بار تلنگانہ کے دورے پر کب آئے تھے اور تلنگانہ کی ترقی کیلئے انہوںنے کیا‘ کیا تھا۔ نائیڈو نے 15 فروری 2014 کو ٹویٹر پر تحریر کیا تھا کہ ان کی پیش قیاسی ہے کہ ریاست کے تمام اضلاع میں پرجا گرجنا جلسہ عام کی تکمیل تک مرکز اور ریاست سے کانگریس حکومت ختم ہوجائے گی اور اس طرح اطالوی مافیا راج کا خاتمہ ہوگا ۔ کے ٹی راما راؤ نے ٹویٹر پر سابق میں چندرا بابو نائیڈو کی جانب سے تحریر کردہ جملوں کو مشہور آخری الفاظ، چندرا بابو نائیڈو کی جانب سے دئیے گئے بیان کو دانشمندانہ سوچ قرار دیتے ہوئے جاننا چاہا کہ 2014 تک راہول اور سونیا نے تلنگانہ کے لئے کچھ نہیں کیا ہے تو پھر اس کے بعد کیا تبدیلی آئی ہے ۔ کانگریس حکومت کے خاتمہ کو اطالوی مافیا راج کا خاتمہ قرار دینے پر تبصرہ کرتے ہوئے کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ اب اطالوی مافیا راج کے نئے دوست سامنے آئے ہیں۔ اور اندازہ لگائیں کہ وہ کون ہیں ؟انہوں نے کانگریس ۔ تلگودیشم اتحاد کو مہا گٹھ بندھن قرار دیئے جانے پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ اس مفاد پرست موقع پرست اتحاد کو مہا گھٹیا بندھن قرار دیا جانا چاہئے ۔

جواب چھوڑیں