ایران کے نکلنے تک شام کی تعمیر نو میں مدد نہیں کریں گے: پومپیو

 امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے خبردار کیا ہے کہ جب تک شام میں ایرانی فورسز موجود ہیں امریکہ شام کی تعمیر نو میں کسی قسم کی مدد نہیں کرسکتا۔رپورٹ کے مطابق ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں مائیک پومپیو نے کہا کہ شام کی تعمیر نو میں اس وقت ہم کوئی مدد نہیں کر سکتے جب تک ایرانی ملیشیائیں اور فورسز شام میں موجود ہیں۔ پہلے ایرانی فورسز کو شام سے نکلنا ہوگا، اس کے بعد شام کی تعمیر نو کے بارے میں کچھ سوچیں گے۔ ایرانی فورسز کے شام سے مکمل طور پر نکل جانے کے بعد ہی امریکہ شام میں تعمیر نو میں مالی مدد فراہم کرسکتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایران کو شام سے مکمل طورپر نکل جانے کی ضمانت دینا ہوگی، ورنہ ہم شام کی تعمیر نو کے لیے ایک ڈالر بھی صرف نہیں کریں گے۔ وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ صدر ٹرمپ شام میں جاری تنازعہ کا پرامن سیاسی حل چاہتے ہیں۔ شام کے حوالے سے ہمارے مطالبات میں پہلا مطالبہ ایرانی فورسز کا شام سے انخلاء ہے۔ ایران کے حوالے سے سخت موقف رکھنے والے امریکی مشیر جون بولٹن نے گذشتہ ماہ ایک بیان میںکہا تھا کہ “داعش” کی شکست تک امریکی فوج شام میں موجود رہے گی۔ اس کے ساتھ ساتھ اگر شام میں ایرانی فورس موجود رہتی ہیں تو امریکہ بھی شام میں موجود رہے گا۔ پچھلے ماہ ہی روسی صدر ولادی میر پوٹین نے شام کی تعمیر نوکے لیے ڈونرممالک کا اجلاس بلانے کا مطالبہ کیا تھا۔

جواب چھوڑیں