جرم کا شکار بھی فوجداری مقدمہ میں اپیل داخل کرسکتا ہے : سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے ایک تاریخی فیصلہ میں آج یہ رولنگ دی کہ حکومت کے علاوہ فوجداری جرم کا شکار بھی اعلیٰ عدالتوں میں ضابطہ فوجداری کے تحت اپیل داخل کرسکتا ہے اور اپیلیٹ کورٹ کی اجازت کے بغیر ملزم کی برأت کو چیلنج کرسکتا ہے۔ جسٹس ایم بی لوکر کی زیر قیادت سہ رکنی بنچ نے ایک کے مقابلہ میں دو کے اکثریتی فیصلہ میں کہا کہ ضابطہ فوجداری کی دفعہ 372 کی (جو فوجداری مقدمات میں اپیلوں سے نمٹنے سے تعلق رکھتی ہے) ’’حقیقت پسندانہ انداز میں، فراخدلانہ طور پر اور ترقی پسندی کے زاویہ نگاہ سے‘‘ تشریح کی جانی چاہئے تاکہ جرم کے شکار کو فائدہ حاصل ہوسکے۔

جواب چھوڑیں