سبری ملا تنازعہ : سپریم کورٹ فیصلہ کیخلاف احتجاج جاری

اپوزیشن کانگریس اور کیرالا میں بی جے پی کارکنوں نے آج ایپا عقیدت مندوں کے ساتھ اظہارِ یگانگت کے سلسلہ میں مظاہرہ کیا۔ یہاں تک کہ سی پی آئی ایم کے قریبی شراکت دار سی پی آئی ایم زیرقیادت ایل ڈی ایف نے بھی کہا کہ سپریم کورٹ کے احکام پر جو سبری ملا کے تعلق سے دیا گیا ہے اس کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش ہورہی ہے۔ بی جے پی نے کہا کہ یہ احتجاج صرف کیرالا کی حد تک نہیں رہے گا ، بلکہ جنوبی ریاستوں تک بھی پھیل جائے گا۔ سی پی آئی ریاستی سکریٹری کنم راجندرن نے بتایا کہ ایل ڈی ایف عقیدت مندوں کے خلاف نہیں ہے ، حکومت سپریم کورٹ کے احکام پر عمل آوری کی پابند ہے اور اس پر وہ عمل کرے گی اور کہا کہ اس مسئلہ کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش کی گئی ہے۔ کانگریس کارکنوں بشمول متعدد خواتین کے گروپ کی جانب ٹراونکو دیوس وم بورڈ کے دفتر کے روبرو دھرنا دیا گیا اور اس موقع پر مندر کے تعلق سے یہ نعرے بلند کیے گئے کہ سبری ملا ٹمپل کا تحفظ کیا جائے ۔ عقیدت مندوں کے گروپ افتتاح کرتے ہوئے کے پی سی سی مہم کمیٹی چیرمین کے مرلی دھرن ایم ایل اے نے کہا کہ حکومت کو نظرثانی کی درخواست عدالت ِ عالیہ کے فیصلہ کے خلاف داخل کرنا چاہیے ، تاکہ خواتین کو جن کا تمام عمروں سے تعلق ہو ، انہیں سبری ملا مندر میں داخلہ کی اجازت مل سکے ۔ بی جے پی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے جس نے اس مسئلہ پر احتجاجی مارچ کا آغاز کیا ہے ، مرلی دھرن نے کہا کہ اگر مرکز عدالت کو مندر کے روایات اور طریقۂ کار میں مداخلت کرنے کے لیے پابندی عائد کرتی ہے تو اسے ایک قانون لانا ہوگا ۔ اس دوران سبری ملا تحفظ طویل مارچ جس کی قیادت بی جے پی کررہی ہے پڑوسی کولم ضلع سے روانہ ہورہی ہے۔ مارچ ریاستی دارالحکومت میں 15 اکتوبر کو اختتام پذیر ہوگی۔ ا س موقع پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے بی جے پی صدر پی ایس سری دھرن پلے نے سی پی آئی ایم زیرقیادت ایل ڈی ایف حکومت کے فیصلہ کو تنقید کا نشانہ بنایا ، جو عدالت ِ عالیہ کے احکام پر عمل آوری کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ زعفرانی پارٹی ان عقیدت مندوں کے ساتھ ہے اور اس معاملہ میں کوئی مفاہمت نہیں کی جائے گی۔ پارٹی بہت جلد اپنے احتجاج کو جو اس مسئلہ پر شروع کیا گیا ہے ، جنوبی ریاستوں تک وسعت دے گی۔ اس سلسلہ میں لاکھوں کی تعداد میں ایپا عقیدت مند پہاڑی مندر کا دورہ کریں گے ۔ جب سالانہ یاتری سیزن ہوگا ۔ اسی طرح کا احتجاجی دھرنا پنڈلم شاہی خاندان نے سکریٹریٹ کے سامنے منعقد کیا ۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ احتجاج لارڈ ایپا سے وابستہ ہے اور مطالبہ کیا کہ روایات اور اصولوں کو محفوظ رکھنے کے لیے ایک قانون وضع کیا جائے ۔ سیاسی خطوط سے قطع نظر کانگریس قائدین وی ایس شیوا کمار ایم ایل اے ، پنڈلم سدھاکرن اور سریش گوپی ، اداکار سے بی جے پی راجیہ سبھا ممبر بننے والے نے بھی دھرنا میں حصہ لیا، جس کا اہتمام ایپا دھرنا سمرکھشنا سمیتی کے بیانر تلے کیا گیا۔

جواب چھوڑیں