جئے پور میں زِکا وائرس کے مریضوں کی تعداد 51 ہوگئی

 جئے پور کے مختلف مقامات سے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ملیریا ریسرچ(این آئی ایم آر) کی ایک ٹیم نے مچھروں کے تازہ نمونے اکٹھا کئے جبکہ راجستھان کے دارالحکومت میں زِکا مریضوں کی تعداد 51 ہوگئی ہے۔ ان میں 11 حاملہ خواتین شامل ہیں۔ مرکزی وزارت ِ صحت کے ذرائع نے یہ بات بتائی۔ گنجان آباد شاستری نگر علاقہ میں مچھرکش دھواں سے وائرس کو پھیلنے سے روکا جارہا ہے۔زِکا وائرس aedes aegypti نامی مچھر سے پھیلتا ہے۔ اس سے بخار آتا ہے اور جوڑوں میں درد ہوتا ہے۔ یہ حاملہ عورتوں کے لئے نقصان دہ ہوتا ہے۔ اس وائرس سے متاثرہ حاملہ عورت کے بچہ/ بچی کا سر چھوٹا ہوتا ہے۔ ہندوستان میں زکا وائرس پہلی مرتبہ احمدآباد میں جنوری 2017 اور جولائی 2017 میں ٹاملناڈو کے ضلع کرشنا نگر میں پھیلا تھا۔ اس وقت اس پر کامیابی سے قابو پالیا گیا تھا۔ مرکزی وزارت ِ صحت صورتحال پر مسلسل نظر رکھے ہوئے ہے۔

جواب چھوڑیں