سنگاپور میں طالبہ پر دست درازی ۔ہندوستانی یوگا ٹیچر کو سزائے قید میں اضافہ

 ایک ہندوستانی یوگا انسٹر کٹر جس نے کئی مرتبہ اپنی اسٹوڈنٹ کی عصمت ریزی کی جبکہ اس کی سزائے قید کی میعاد کو 9 ماہ سے بڑھا کر ایک سال کردیاگیا ہے ۔ علاوہ ازیں اسے تین مرتبہ چھڑی سے ضرب لگانے کی بھی سزا سنائی گئی ۔ سنگاپور کی عدالت نے کل یہ فیصلہ دیا ۔ 26 سالہ راکیش کمار پرساد نے اپنی سزا کے خلاف اپیل کی تاہم ہائیکورٹ میں اس کے استدلال کو مسترد کردیاگیا ۔ عدالت نے استغاثہ کی جانب سے اپیل کی اجازت دی ۔ اس بات کااظہار اسٹریٹ ٹائمز نے کیا ۔ جسٹس سی کے اون نے بتایا کہ راکیش نے صریح طور پر اپنے اعتمادی موقف کا ناروا استعمال کیاہے ۔ جج نے بتایا کہ وقتاً فوقتاً اس نے ڈھٹائی کے ساتھ دست درازی کرتے ہوئے اور ساتھ ہی ساتھ اس کی قدر و قیمت کو گھٹاتے ہوئے اسے دھمکیاں بھی دی تھی ۔ جس سے چھڑی سے ضرب لگانے کی ضرورت کااظہار ہوتاہے ۔ راکیش نے اس خاتون پر دست درازی کی جو اس وقت 25 سال عمر کی تھی اور وہ 26 اپریل 2015 کو ٹائم پائنس ہاوزنگ اسٹریٹ میں رئیل یوگا اسٹوڈیو میں اس کے کلاس کی طالبہ تھی ۔ خاتون نے دوسرے دن اس نے پولیس کو اس کی اطلاع دی تھی ۔ قانونی کاروائی میں راکیش دست درازی اور مجرمانہ طاقت کے استعمال کے ساتھ خاتون کے ساتھ دست درازی کا قصور وار پایاگیا ۔ اسے ماہ اپریل میں 9 ماہ جیل کی سزا دی گئی تھی اور ساتھ ہی ساتھ خاتون کی گردن پکڑنے پر ایک ہزار سنگاپوری ڈالر جرمانہ بھی عائد کیاتھا ۔اس نے اپنی سزا کے خلاف اپیل کی تھی ۔ اس کے وکیل نے بتایا کہ اسٹوڈیو کے سرویلنس فوٹیج سے بتایا کہ اس نے اس انداز میں خاتون سے دست درازی نہیں کی تھی جیسا کہ خاتون نے بتایا ۔ لیکن جسٹس سی نے بتایا کہ تصویر کے ناقص معیارکی وجہ سے تفصیلات میں امتیاز کرنا ممکن نہیں ۔ فوٹیج سے راکیش کی تائید کوئی معقول شک و شبہ کااظہار نہیں ہواہے ۔

جواب چھوڑیں