طوفان تتلی کی تباہی ۔ ریاست کو1200 کروڑ کی امداد ناگزیر: چیف منسٹر اے پی

حکومت آندھرا پردیش نے مرکزی حکومت سے خواہش کی ہے کہ ریاست کے دو اضلاع سریکا کولم اور وجیا نگرم میں جہاں خطرناک طوفان تتلی نے تباہی مچادی ہے ، راحت کاری اقدامات کے لئے1200 کروڑ کی عبوری امداد فراہم کرے ۔ طاقتور طوفان تتلی ، جمعرات کی صبح ان دو ساحلی اضلاع سے ٹکرایا تھا جس کے نتیجہ میں سریکا کولم اور وجیانگرم کے چند مقامات پر شدید بارش ہوئی۔ ان اضلاع کے مختلف مقامات پر10 سنٹی میٹر تا 43 سنٹی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ۔ وزیر اعظم نریندر مودی کے نام ایصال کردہ اپنے مکتوب میں چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ طاقتور طوفان تتلی ساحلی اے پی کے شمالی علاقوں سے ٹکرا یا تھا۔ جس کے نتیجہ میں اس علاقہ بالخصوص سریکاکولم اور وجیانگرم اضلاع میں انفراسٹراکچر کو شدید نقصان پہنچا ہے ۔ نائیڈو نے بتایا کہ طوفان تتلی کی تباہی سے املاک ، فصلوں اور انفراسٹراکچر کو شدید نقصان پہنچا ہے ۔ اور انقصانات کا تخمینہ 2,800 کروڑ روپے لگایا گیا ہے ۔ باغبانی کا شعبہ سب سے زیادہ متاثر رہا نقصانات کا اندازہ ایک ہزار کروڑ روپے لگایا گیا ہے ۔ اس کے بعد زرعی شعبہ کو 800کروڑ ، برقی شعبہ کو500 کروڑ، آر اینڈ بی ، پنچایت راج، رورل واٹر سپلائی اور اریکشن کے املاک کی تباہی کا تخمینہ ہر ایک کو ایک سوکروڑ روپے لگایا گیا ہے ۔ جبکہ محکمہ سمکیات کی 50 کروڑ روپے مالیتی املاک کو نقصان پہنچا ۔ نریندر مودی کو روانہ کردہ مکتوب میں نائیڈو نے یہ بات بتائی۔ ریاستی حکومت نے متاثرہ علاقوں میں جنگی خطوط پر بچاؤ اور راحت کاری اقدامات شروع کردئیے ہیں۔ اور وہ خود (نائیڈو) ان اضلاع میں بچاؤ اور راحت کے اقدامات کی نگرانی کررہے ہیں۔ چیف منسٹر نے ان متاثرہ علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے راحت اور بحالی کے کاموں کا جائزہ لیا ہے ۔ انسانی جانوں، املاک اور انفرااسٹرکچر کی شدید تباہی کے پیش نظر چیف منسٹر اے پی نائیڈو نے مرکز پر زور دیا کہ وہ فراخدلی اور سرعت کے ساتھ راحت کاری کے لئے فنڈس منظور کرے تاکہ عوام کے مسائل کم سے کم ہوسکیں۔ دفتر سی ایم او سے جاری اعلامیہ میں بتایا گیا ہے کہ شدید طوفان تتلی کے باعث سریکاکولم میں 7 اور وجیانگر م ضلع میں ایک شخص ہلاک ہوگیا جبکہ دو ماہی گیر لاپتہ بتائے جاتے ہیں، اس طوفان اور بارش کے نتیجہ میں290 کیلو میٹر سڑکوں کو نقصان پہنچا اس کے ساتھ 8,982 مکانات،80 ، چھوٹے آبپاشی وسائل اور 16 رورل واٹر سپلائی ٹینکس کو بھی نقصان پہنچا ہے۔ اس خوفناک طوفان سے سریکا کولم ضلع میں بی ایس این ایل کے انفراسٹراکچر کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے ۔ ضلع سریکاکولم میں1,36,531 ہیکٹر اراضی پر دھان کے بشمول 1,39,844 ہیکٹر اراضی پر محیط زرعی فصلیں تباہ ہوگئیں۔ یو این آئی کے بموجب چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو نے آج وزیر اعظم نریندر مودی کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے کہا کہ طوفان تتلی سے ریاست کے شمال ساحلی اضلاع میں2800 کروڑ مالیتی املاک کو نقصان پہنچا ہے۔ نائیڈو نے نریندر مودی سے خواہش کی ہے کہ اضلاع سریکاکولم اور وجیا نگرم میں بچاؤ اور راحت کاری کیلئے فوری طور پر 1200 کروڑ روپے کی عبوری امدا فراہم کریں۔ انہوںنے کہا کہ اس طوفان سے جملہ8 افراد ہلاک ہوگئے اور1.40 لاکھ ہیکٹر اراضی پر فصلیں تباہ ہوگئیں۔ ڈیزاسٹر مینجمنٹ ڈپارٹمنٹ کے محکمہ کے عہدیدار نے بتایا کہ ضلع سریکاکولم میں طوفان سے متاثرہ افراد کو15‘ باز آباد کاری مراکز میں ٹھہرایا گیا ۔ این ڈی آر ایف کی ٹیموں نے55سڑکوں پر گرپڑے برقی پولس کے علاوہ درختوں کے ملبہ کو ہٹایا اور ٹریفک کو بحال کیا ۔ عہدیداروں نے بتایا کہ اس طوفان سے ضلع کے 18منڈلوں میں9.06 لاکھ افراد متاثر ہوئے ہیں۔ جبکہ تیز ہواؤں اور بارش کے سبب202 مواضعات میں زبردست تباہی ہوئی ۔

جواب چھوڑیں