بھینسہ اورکاماریڈی میں راہول کے جلسوں کی تیاریوں کاجائزہ

صدرتلنگانہ کانگریس این اتم کمار ریڈی نے آج بھینسہ اورکاماریڈی کا دورہ کرتے ہوئے راہول گاندھی کے دورہ کے ضمن میں کئے جارہے انتظامات کی تیاریوںکاجائزہ لیا۔ راہول گاندھی 20اکتوبرکو 11بجے دن تاریخی چارمینار کے قریب راجیوگاندھی سدبھاوناکمیٹی کے زیراہتمام منعقد شدنی جلسہ سے خطاب کرنے کے بعدبھینسہ اورکاماریڈی روانہ ہوں گے جہاں وہ انتخابی جلسوں سے خطاب کریںگے ۔ اتم کمارریڈی نے آج دوپہر سابق اپوزیشن قائد کے جاناریڈی ‘ کارگذار صدر بھٹی وکرامارکہ ‘سکریٹری این بوس راجو‘ سرینواس کرشنن‘سبیتااندرا ریڈی انچارج عادل آباد کے ہمراہ بیگم پیٹ ایرپورٹ سے بذریعہ ہیلی کاپٹر بھینسہ روانہ ہوئے ۔ جہاں انہوں نے جلسہ کے مقام کا معائنہ کیااور انتظامات کے ضمن میں ضلع کانگریس کے قائدین سے تبادلہ خیال کیا۔ بعدازاں یہ کانگریس قائدین کاماریڈی پہنچے جہاں انچارج کانگریس امورآرسی کنتیا‘سکریٹری مدھویاشکی گوڑ‘ قائد اپوزیشن محمدعلی شبیر ودیگر قائدین کے ہمراہ آرٹس کالج گرائونڈ کا معائنہ کیا جہاں 20اکتوبرکو راہول گاندھی جلسہ سے خطاب کرنے والے ہیں۔ اس موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اتم کمار ریڈی نے پارٹی قائدین کوہدایت دی کہ وہ راہول گاندھی کے جلسہ میں تمام طبقات سے تعلق رکھنے والے عوام کی زیادہ سے زیادہ شرکت کویقینی بنائیں۔ انہوںنے کہاکہ راہول گاندھی اپنے خطاب میں نہ صرف ٹی آرایس حکومت کی ناکامیوں اوربدعنوانیوں کاپردہ فاش کریںگے بلکہ کانگریس پارٹی کی پالیسیوں کواجاگر کریں گے ۔ انہوں نے کہاکہ آئندہ اسمبلی انتخابات ‘کے سی آر خاندان اورتلنگانہ عوام کے درمیان رہیں گے ۔ کانگریس پارٹی ریاست میں جمہوریت کی بقاء کے لئے اہم رول ادا کرے گی ۔ انہوں نے کہاکہ راہول گاندھی کے اگسٹ کے دورہ حیدرآباد سے پریشان ہوکر کے سی آر کو 9ماہ قبل اسمبلی تحلیل کرنے پر مجبور ہونا پڑا۔ کیونکہ راہول گاندھی کے جلسوں میں عوام کی کثیر تعدادکی شرکت سے ٹی آرایس قائدین کی نیندیں حرام ہوگئی تھیں۔کے سی آر نے اسی شام پریس کانفرنس منعقد کرتے ہوئے راہول گاندھی پر تنقید کی تھی۔ بعدازاں اس کے جواب میں کے سی آر نے ابراہیم پٹنم میں پرگتی نیویدیکاسبھا کے نام سے جلسہ منعقد کیا اور اس جلسہ کی تیاریوں اورعوام کوجلسہ میں لانے کے لئے 300کروڑ روپے خرچ کئے گئے ۔25لاکھ افراد کی شرکت کا دعویٰ کیاگیا لیکن صرف 3لاکھ افراد نے ہی شرکت کی ۔ریڈی نے کہاکہ راہول گاندھی کے مجوزہ دورہ سے تلنگانہ میں کانگریس پارٹی مزید مستحکم ہوگی۔ ہرایک کانگریسی کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ عوام کی کثیرتعدادکی شرکت کویقینی بناتے ہوئے جلسہ کوکامیاب کریں۔ انہوں نے پارٹی قائدین اور کارکنوں پرزوردیا کہ وہ آئندہ (52) دنوں یعنی7 دستمبر تک رات دن محنت کرتے ہوئے انتخابی مہم میںحصہ لیں اورپارٹی کی کامیابی کویقینی بنائیں۔ اس دوران اتم کمارریڈی نے پراناشہر کے کانگریسی قائدوسابق کارپوریٹر محمدغوث سے ربط پیدا کرتے ہوئے انہیں 20 اکتوبر کو چارمینار کے پاس راہول گاندھی کے شاندار استقبال کی تیاریوں کاآغاز کرنے کی ہدایت دی ۔

جواب چھوڑیں