مدھیہ پردیش میں کانگریس ‘ برسراقتدار آئے گی :راہول گاندھی

کانگریس صدر راہول گاندھی نے پیر کے دن اعتماد ظاہر کیا کہ ان کی پارٹی 28 نومبر کے اسمبلی الیکشن کے بعد مدھیہ پردیش میں برسراقتدار آئے گی۔ انہوں نے یہاں ایک جلسہ عام میں کہا کہ ریاست میں کانگریس جو حکومت بنائے گی وہ کسانوں ‘ چھوٹے کاروباریوں‘ خواتین اور پارٹی ورکرس کو جوابدہ ہوگی۔ کانگریس ‘ مدھیہ پردیش میں 2004 سے اقتدار سے باہر ہے اور وہ اس بار شیوراج سنگھ چوہان کی بی جے پی حکومت کو بے دخل کرنا چاہتی ہے۔ راہول گاندھی ‘ مدھیہ پردیش کے 2 روزہ دورہ پر ہیں۔ انہوں نے اپنا وعدہ دُہرایا کہ کانگریس کو برسراقتدار لایا گیا تو حکومت بننے کے 10 دن میں کسانوں کا قرض معاف کردیا جائے گا۔ کانگریس قائد نے نریندر مودی کو نشانہ تنقید بنایا اور کہاکہ وزیراعظم نے ہندوستان کے عوام کی توہین کی ہے۔ وزیراعظم نے لال قلعہ کی فصیل سے کہا تھا کہ ملک 70 سال تک سوتا رہا۔ یہ سماج کے ہر طبقہ کی بے عزتی ہے۔ مودی نے کہا تھا کہ ہندوستان پہلے سویا ہوا ہاتھی تھا جو اَب جاگ گیا ہے اور دوڑنے لگا ہے۔ پی ٹی آئی کے بموجب کانگریس صدر نے پیر کے دن الزام عائد کیا کہ وزیراعظم نریندر مودی غریبوں کو دھتکارتے ہیں لیکن نیرؤ مودی‘ میہول چوکسی اور انیل امبانی جیسے تاجروںسے ان کی بڑی قربت ہے۔ راہول گاندھی نے کہا کہ وزیراعظم میں یہ جواب دینے کی ہمت نہیں کہ رافیل کا ٹھیکہ سرکاری ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ(ایچ اے ایل) سے چھین کر انیل امبانی کی فرم کو کیوں دیا گیا۔ راہول نے یہ بھی الزام عائد کیا کہ گجرات میں دلتوں اور اقلیتوں پر حملوں کے وقت وزیراعظم کچھ نہیں کہتے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس ورکرس پارٹی کی ریڑھ کی ہڈی ہیں۔ مدھیہ پردیش میں کانگریس کے برسراقتدار آنے پر انہیں ترجیح دی جائے گی ۔

جواب چھوڑیں