ٹی آر ایس میں جمہوریت کا فقدان: راملو نائک

ٹی آر ایس سے معطل رکن قانون ساز کونسل راملو نائک نے کہا کہ حکمراں جماعت میں جمہوریت‘ عزت وقار نہیں ہے۔ یہ سیاسی جماعت ایک پرائیوٹ لمیٹیڈ کی طرح تیار ہوگئی ہے۔ ٹی آر ایس سے معطل کئے جانے کے بعد راملو نائک نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے کہا کہ پارٹی نے انہیں وجہ بتائو نوٹس جاری کئے بغیر معطل کردیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ گریجنوں کے تحفظات میں اضافہ کا مطالبہ کر رہے تھے اس لئے انہیں پارٹی سے معطل کردیاگیا۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندرشیکھر رائو کی قیامگاہ پرگتی بھون میں تلنگانہ کے غدار جمع ہوتے ہیں جنہوں نے علیحدہ تلنگانہ تحریک کی مخالفت کی تھی انہیں کابینہ میں شامل کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے دلتوں اور گریجوں کو 3ایکر اراضی فراہم کرنے میں حکومت ناکام ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر نے علیحدہ تلنگانہ تحریک کے موقع پر دلتوں کے تحفظات میں اضافہ کرنے کا وعدہ کیا تھا‘ اب تک انہوں نے اس وعدہ کو پورا نہیں کیا۔ انہوں نے حکومت پر گریجنوں کو نظر انداز کرنے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ حکومت نے اب تک بے روزگار نوجوانوں کو روز گار فراہم نہیں کیا اورڈی ایس سی منعقد نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی انتخابات میں گریجن‘ ٹی آر ایس کو سبق سکھائیں گے۔ راملو نائک نے کہا کہ وہ گریجن قائدین اور دانشوروں کے ساتھ مذاکرات کے بعد اپنے مستقبل کا لائحہ عمل مرتب کریں گے۔

جواب چھوڑیں