ایران کے خلاف امریکہ کی نئی اقتصادی پابندیوں کا اعلان

 امریکہ نے ایران پر نئی اقتصادی پابندیوں کا اعلان کرتے ہوئے ایرانی فوج کو ساز و سامان فراہم کرنے والی کمپنیوں کو بھی پابندی کے شکنجے میں جکڑ دیا۔بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی محکمہ خزانہ نے ایران کی پیرا ملٹری فوج کو ساز و سامان کی خریداری میں مالی معاونت کرنے والے 4 بینکوں اور مختلف کمپنیوں پر مشتمل نیٹ ورک پر پابندی عائد کردی ہے۔امریکہ نے الزام عائد کیا کہ یہ پیرا ملٹری گروپس کم عمر لڑکوں کو جنگی تربیت دے کر انہیں شام سمیت دوسرے ممالک میں لڑائی کے لیے بھیجتے ہیں اور پورے معاملہ میں آ کمپنیاں اور دیگر ادارے ان کی مالی معاونت کرتے ہیں۔ ایران کے سپاہ پاسداران انقلاب کی ہدایات پر حربی نوعیت کا کام سونپا جاتا ہے‘‘۔یہ پابندیاں امریکہ کی جانب سے ایران کے خلاف معاشی اقدام کا حصہ ہیں، تاکہ ملک کو دباؤ میں رکھا جائے کہ وہ خطے میں جارحیت اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی کارروائیاں بند کرے۔تعزیرات کے تحت امریکیوں پر اس نیٹ ورک یا اس کے ذیلی اداروں کے ساتھ کاروباری لین دین کی روک لگا دی گئی ہے۔ اس اقدام کے تحت امریکی تحویل والے علاقے میں نیٹ ورک کے اثاثے منجمد کردیے گئے ہیں۔امریکی وزارت خزانہ نے کہا ہے کہ بینک ملت، مہر اقتصاد بینک، مہر اقتصاد ایرانی سرمایہ کاری کمپنی اور پانچ دیگر سرمایہ کاری اداروں پر پابندی لگائی گئی ہے۔

جواب چھوڑیں