روہنگیا لڑکیوں کو انسانی اسمگلنگ کا خطرہ

 اقوام متحدہ مائگریشن ایجنسی نے انکشاف کیا ہے بنگلہ دیش میں پناہ گزین کیمپوں میں رہنے والی روہنگیاںلڑکیوں کو انسانی اسمگلنگ کا خطرہ سب سے زیادہ ہے اور انسانی اسمگلروں کی تیز نظر ان پر رہتی ہے۔ایجنسی نے بتایا کہ غریب خاندانوں کے لوگ اپنی لڑکیوں کو کام کرنے کے لئے باہر بھیجنے پر مجبور ہیں اور انسانی اسمگلر اسی بات کا سب سے زیادہ فائدہ اٹھاتے ہیں۔ ایسی نوجوان لڑکیاں آسانی سے ان کے نیٹ ورک میں پھنس جاتی ہیں۔یہاں کے مچھلی بازار میں کام کرنیو الی ایک روہنگیائی خاتون نے بتایا کہ کیمپ کے اندر خواتین کے لئے کام کے مواقع بہت محدود ہیں اور ایسے میں انہیں باہر ہی آنا پڑتا ہے۔ کاکس مارکیٹ کے علاقے میں دو تہائی خواتین کو بندھوا مزدور بننے کا لالچ دیا جاتا ہے اور تقریبا 10 فیصد جسمانی استحصال کا شکار ہوتی ہیں۔

جواب چھوڑیں