میرٹھ میں فوجی جوان پاکستان کیلئے جاسوسی کے الزام میں گرفتار

 اترپردیش کے میرٹھ میں فوج کا ایک جوان پاکستان کیلئے جاسوسی کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔ سرکاری ذرائع نے چہارشنبہ کو یہاں بتایا کہ میرٹھ چھاؤنی میں واقع سگنل رجمنٹ میں سگنل مین کے عہدے پر تعینات جوان کو پاکستان کیلئے معلومات جمع کرنے اور شیئر کرنے کے الزام میں فوجی پولیس نے گرفتار کیا ہے۔جوان سے کئی اہم معلومات حاصل کی گئی ہیں۔ انہوں بتایا کہ جوان پاکستانی خفیہ ایجنسی پاکستان انٹلیجنس آپریٹو ( پی آئی او) کو مغربی کمان اور اس کے تحت آنے والے کور اورڈیویثرن سے متعلق خفیہ معلومات مہیا کرا رہا تھا۔ میرٹھ چھاؤنی میں یہ پہلی بار ہے جب ایک فوجی کو پاکستان کیلئے جاسوسی کرنے کے الزام میں پکڑا گیا ہے۔ فوج کی تمام خفیہ ایجنسیاں اس معاملے کی جانچ میں مصروف ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ بنیادی طور سے اتراکھنڈ کا باشندہ یہ فوجی جوان گزشتہ دس برسوں سے ہندوستانی فوج میں ملازم ہے۔ وہ گزشتہ تقریبا دس ماہ سے پاکستانی خفیہ ایجنسیوں سے متعلق لوگوں کے رابطے میں تھا۔ اس دوران فوج کے کئی خفیہ دستاویزات واٹس ایپ سے بھیجے گئے اور اس کی پاکستان کے کئی فون نمبروں پر بھی بات ہوئی۔ آرمی انٹلیجنس کو تقریبا تین ماہ قبل اس کی بھنک لگی تھی۔ فون پر پاکستان سے رابطہ میں رہنے کے ساتھ ہی موقع ملتے ہی واٹس ایپ پر اینڈ۔ٹو اینڈ اینکرپشن کے ذریعہ خفیہ دستاویزات بھیجا کرتا تھا۔ فوج نے ملزم فوجی جوان کا نام ظاہر نہیں کیا ہے۔ سگنل رجمنٹ سے وابستہ تمام دفاتر میں ان دنوں مسلسل تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ اس معاملے میں فوج کی جانب سے کورٹ آف انکوائری کی جائے گی۔

جواب چھوڑیں