سابر ی مالا مسئلہ، بی جے پی۔ آر ایس ایس اور کانگریس کی گندی سیاست:ایس سدھاکر ریڈی

سی پی آئی نے جمعرات کو بی جے پی ۔ آر ایس ایس اتحاد اور کانگریس پر دہرا معیار اختیار کرنے کاا لزام عائد کیا اور کہا کہ یہ جماعتیں سابری مالا مسئلہ پر گندی سیاست میں ملوث ہیں اور عوام کے جذبات کا استحصال کرتے ہوئے کیرالا میں برسر اقتدار لیفٹ حکومت کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا ( سی پی آئی ) ، کیرالا میں برسر اقتدار سی پی آئی ایم کی زیر قیادت ایل ڈی ایف ( لیفٹ ڈیموکریٹک فرنٹ) حکومت میں سب سے بڑی جماعت ہے ۔ سی پی آئی کے قومی جنرل سکریٹری ایس سدھاکر ریڈی نے کہا کہ یہ بڑی بدبختی کی بات ہے کہ کیرالا میں سپریم کورٹ کے فیصلہ کے خلاف احتجاج منظم کیا جارہا ہے ۔ عدالت عظمی نے سابری مالا مندر میں خواتین کے داخلہ کی اجازت دے دی ہے۔ جس کے خلاف کیرالا میں احتجاج جاری ہے ۔ احتجاجیوں کو اپنے جذبات کے بجائے سپریم کورٹ کے فیصلہ کا احترام کرنا چاہئے ۔ ان کا یہ احتجاج عدالت کے احکام کے خلاف ہے۔ سدھاکر ریڈی نے کہا کہ 21ویں صدی میں صنعتی مساوات کو تسلیم کرلیا گیا ہے ۔ اس طرح کے پرانے خیالات جاری نہیں رہیں گے ۔ چہارشنبہ کو احتجاجیوں نے حائضہ گروپ کی خواتین کو مندر میں داخل ہونے سے روکدیا جبکہ سپریم کورٹ نے حائضہ عمر کی گروپ کی خواتین کو بھی سابری مالا مندر میں داخلہ کی اجازت دینے کی ہدایت دی تھی۔ جب خواتین ، مندر میں داخل ہونے کی کوشش کی تو احتجاجیوں نے انہیں زبردستی روکدیا اورنیلا کل کے مقام پر جہاں مندر ہے، احتجاجیوں کا پولیس سے تصادم ہوگیا ۔ پولیس نے احتجاجیوں پر لاٹھی چارج کرتے ہوئے حالات پر قابو پالیا ۔ سدھاکر ریڈی نے اس احتجاج کو سیاسی قرار دیا اور کہا کہ کیونکہ کیرالا میں لیفٹ فرنٹ کی حکومت برسر اقتدار ہے ۔ اس لئے اس مسئلہ پر سیاست کی جارہی ہے ۔ انہوںنے کہا کہ ایک طرف بی جے پی اور ار ایس ایس قومی سطح پر سپریم کورٹ کے فیصلہ کا خیر مقدم کرتی ہے تو دوسری جانب یہ زعفرانی گروپ، ریاست میں اس عدالتی فیصلہ کی مخالفت کرتی ہے ۔ یہ ایک گندہ کھیل ہے ۔ آر ایس ایس اور بی جے پی بھی اس بارے میں دہرا کھیل رہی ہے ۔ قومی سطح پر ایک اور ریاستی سطح پر دوسرا موقف اختیار کررہی ہے ۔ انہوںنے کہا کہ اگر آر ایس ایس ۔ بی جے پی اخلاق اور اقدار رکھتی ہیں انہیں ریاست میں اپنے احتجاجی کیڈر کو قابو میں رکھنا ہوگا اور احتجاج کو واپس لینا ہوگا ۔ کانگریس کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے سدھاکر ریڈی نے کہا کہ اس سلسلہ میں کانگریس کا رویہ بھی غیر ذمہ دارانہ رہا ہے ۔ کیرالا میں کانگریس بڑی اپوزیشن پارٹی ہے مگر اس کا رویہ غیر ذمہ دارانہ ہے ۔ کمیونسٹ پارٹی کے معمر قائد نے کہا کہ کانگریس اور بی جے پی ، اس مسئلہ پر غیر ضروری سیاست کررہی ہیں اور یہ دونوں عوام کے مذہبی جذبات کو مشتعل کررہے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ حکومت کیرالا، سابری مالا مندر مسئلہ پر سپریم کورٹ میں فیصلہ پر نظر ثانی کی درخواست پیش نہیں کرے گی ۔ کیونکہ حکومت نے پہلے ہی حلفنامہ داخل کرتے ہوئے یہ کہہ چکی ہے کہ مندر میں خواتین کے داخلہ پر کوئی اعتراض نہیں ہے ۔

جواب چھوڑیں