علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں غلام نبی آزاد کا تبصرہ ‘ ہندوؤں کو گالی۔سمبت پاتراکا الزام

بی جے پی نے آج کانگریس پر ہندوؤں کی توہین اور ان کے حوصلے پست کرنے کا الزام عائد کیا اور اپوزیشن پارٹی کے قائد غلام نبی آزاد کے اس مبینہ ریمارک کو ایک گالی قراردیا کہ انتخابی مہم کے لئے انہیں مدعو کرنے والے ہندو امیدواروں کی تعداد میں قابل لحاظ کمی آئی ہے۔ آزاد نے چہارشنبہ کو لکھنو میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو )کی ایک تقریب میں مبینہ طورپر یہ تبصرہ کیا تھا۔ ان کے اس تبصرہ کا مقصد بظاہر بی جے پی زیرقیادت حکومت کے تحت سیاسی ماحول پر تنقید کرنا تھا۔ بی جے پی ترجمان سمبت پاترا نے کہا کہ آزاد کو انتخابی مہم کے لئے مدعو کرنے والے افراد کی تعداد میں کمی کی ایک سادہ سی وجہ کانگریس کی گھٹتی مقبولیت ہے۔ اس بات کو آزاد نے ہندو ۔ مسلم زاویوں سے پیش کیا۔ پاترا نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ یہ کوئی معمولی الفاظ نہیں ہیں۔ یہ ملک کے سیکولر تانہ بانہ اور ہندوؤں کے لئے ایک گالی ہے۔ یہ ہندوؤں کی توہین اور ان کے حوصلے پست کرنے کانگریس کی ایک اور کوشش ہے۔ انہوں نے آزاد کے اس الزام کو بھی مسترد کردیا کہ بی جے پی ‘ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کو بدنام کررہی ہے اور کشمیری طلبا کو نشانہ بنارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر دہشت گردوں کی نماز جنازہ پڑھی جائے گی تو اس کی مذمت کی جائے گی ۔یہاں یہ تذکرہ مناسب ہوگا کہ حزب المجاہدین کے کمانڈر منان بشیر وانی جو شمالی کشمیر میں ایک انکاؤنٹر میں ہلاک ہوئے تھے‘ کی نماز جنازہ پڑھنے اور مبینہ طورپر ملک دشمن نعرے لگانے پر گذشتہ ہفتہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے 3 کشمیری طلبا کو معطل کردیا گیا تھا اور ان کے خلاف بغاوت کا ایک مقدمہ درج کرلیا گیا تھا۔ یونیورسٹی نے منگل کے روز 2 طلبا کی معطلی کو منسوخ کردیا۔ پاترا نے کہا کہ غلام نبی آزاد نے قبل ازیں یہ دعویٰ کیا تھا کہ فوج کشمیر میں دہشت گردوں سے زیادہ عام شہریوں کو ہلاک کرتی ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ وہ پاکستان میں انتخابی مہم چلانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے اپوزیشن جماعت پر ہندوؤں کے خلاف سازش رچنے کا الزام بھی عائد کیا اور کہا کہ اس کے قائدین نے ماضی میں ’’ہندوطالبان ‘ ہندو پاکستان اور ہندو دہشت گردوں ‘‘ جیسی اصطلاحات کا استعمال کیا ہے۔

پاترا نے صدر کانگریس راہول گاندھی سے بھی جواب دینے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کسی اور برادری کا حوالہ دینے کبھی ایسے ریمارکس کا استعمال نہیں کرے گی۔

جواب چھوڑیں