نظام آباد میں مورتی کو باہر پھینکنے کا واقعہ۔ نامعلوم شرپسندوں کی کارستانی

نامعلوم شرپسندوں نے شہر نظام آباد کے مالاپلی اربن ہیلت سنٹر کے قریب واقع پوچما مندر سے مورتی کو کل رات باہر پھینکنے کے علاوہ ایک بائیک کو نذرآتش کردیا ۔ اس واقعہ کے بعد اس علاقہ میں سنسنی پھیل گئی ۔ اطلاع کے ملتے ہی بی جے پی ، آرایس ایس اور بجرنگ کارکنوں کے علاوہ سابق رکن اسمبلی اینڈالہ لکشمی نارائنا ، بی جے پی کی سینئر قائد دھن پال سوریہ نارائنا و دیگر نے یہاں پہنچ کر احتجاج کیا ۔ اے سی پی نظام آباد نے یہاں پہنچ کر حالات کو قابو میں کیا ۔ تفصیلات کے بموجب شہر نظام آباد کے ڈیویژن 31 کے علاقہ میں واقع قدیم نلا پوچما مندرسے کل رات دیر گئے نامعلوم افراد نے مورتی کو باہر پھینک دیا ۔ اور شرپسندوں نے مندر کے قریب واقع ایک مکان کے مالک عبدالباسط کی بائیک کو جنہوں نے باہر پارک کی تھی، اسے نذرآتش کردیا ۔ صبح دیکھا تو مورتی باہر گری ہوئی تھی اور بائیک جل کر خاکستر ہوگئی ۔ جس کے بعد آرایس ایس ، بجرنگ دل ، وشوا ہند وپریشد کے کارکن جمع ہوگئے ۔ پوچما مندر مسلم علاقہ میں واقع ہے اور یہ کئی برسوں سے موجود ہے اس کا کوئی پرُسان حال نہیں ہے ۔ درخت کے نیچے ایک چبوترے پر مورتی رکھی گئی تھی اس مندر کی حصاربندی نہیں کی گئی اور اس کی دیکھ بھال کیلئے کوئی بھی موجود نہیں ہے جس کی وجہ سے نامعلوم افراد نے یہ اقدام کیا۔ سابق رکن اسمبلی لکشمی نارائنا نے نعرے بازی شروع کی اس بات کی اطلاع ملتے ہی سب انسپکٹر Vٹائون جان ریڈی ، ٹائون سرکل انسپکٹر نریش ، رورل سرکل انسپکٹرسری ناتھ ریڈی کے علاوہ اے سی پی سرینواس کمار نے احتجاجیو ں سے با ت چیت کی ۔ اے سی پی نے اندرون ایک ہفتہ اس واقعہ کی تحقیق کرتے ہوئے اس میں ملوث افراد کو گرفتار کرنے کا تیقن دیا ۔ جس پر احتجاجیوں نے اپنے احتجاج کو برخواست کردیا۔ بعدازاں بی جے پی قائد دھن پال سوریہ نارائنا نے مندر کی حصاربندی کیلئے اپنی جانب سے 50 ہزار روپئے کا عطیہ دینے کا اعلان کیا ۔ پولیس Vٹائو ن نے اس کیس کو درج کرتے ہوئے تحقیقات کا آغاز کیا اور پولیس پیکٹ کو تعینات کیا ۔ بائیک کے نذرآتش کرنے پر عبدالباسط نے بھی علیحدہ طور پر پو لیس میں درخواست پیش کی ہے ۔

جواب چھوڑیں