سڈنی کے ساحل پر ہیری اور میگھن کی ننگے پیر چہل قدمی

برطانیہ کے پرنس ہیری اور ان کی اہلیہ میگھن مارکل کو آج بونڈی ساحل پر شوز کے بغیر ننگے پیر چہل قدمی کرتے ہوئے دیکھا گیا کیونکہ وہ دماغی صحت بیداری شعور بڑھانے والے ایک آسٹریلیائی گروپ میں شامل ہوئے ہیں۔ اوشیانیا کے ان کے دورہ کے چوتھے روز شاہی جوڑے نے جن کے ہاں 2019میں پہلے بچے کی پیدائش کی خوشخبری ہے۔ انہوں نے بعد میں آسٹریلیا کے وزیراعظم اسکاٹ مورلین سے ملاقات کی۔ دن کے اوائل میں انہوں نے ایک سرفنگ کمیونٹی گروپ ’’ون ویو‘‘ کے ارکان سے ملاقات کی۔ یہ گروپ دماغی اور شخصی جسمانی صحت کی حفاظت کی تشہیر کرتا ہے۔ انہو ںنے ’’فلوروفرائیڈے‘‘ سیشن میں حصہ لیا جس میں شخصی معاملات پر تبادلہ خیال کیا جاتا ہے۔ جوڑے نے ہوائی افراد کے کرائونس حاصل کئے اور ریت پر بیٹھ گئے۔ مارکل نے آسٹریلیا کے ڈیزائنر مارٹن گرانٹ کا ڈیزائن کیا ہوا بھورے رنگ کا دھاری دھار لباس زیب تن کیا تھا۔ وہ علی الصبح4:30بجے ہی نیند سے بیدار ہوگئیں تاکہ یوگا کی مشق کرسکیں۔ یہ ذہن کی جِلا کیلئے بہتر ہوتی ہے۔ ای ایف ای نیوز نے یہ اطلاع دی۔ ’’فلورو فرائی ڈے‘‘ کا 2013میں بونڈی ساحل پر آغاز ہوا۔ اس مشہور پہل پر اب کیلی فورنیا‘ ہوائی اور میکسیکو کے سو سے زیادہ ساحلوں پر عمل کیا جارہا ہے۔ اپنے دورہ کے پانچویں دن ہیری انویکٹس گیمس کا بیانر بلند کرنے سڈنی ہاربر برج پر چڑھیں گے۔ انہوں نے 2014میں ان گیمس کا آغاز کیا تھا تاکہ قدیم معذور اور سابق ملٹری افراد کو ایک موقع مل سکے۔ اس سال انویکٹس گیمس 20تا 28اکتوبر منعقد ہوں گے۔ ہیری‘ ہفتہ کو انویکٹس گیمس کے چند شرکاء سے ملاقات کریں گے۔ سسکس کے ڈیوک اور ڈچس کا یہ پہلا بین الاقوامی سرکاری دورہ ختم اکتوبر تک جاری رہے گا اس میں نیوزی لینڈ‘ فیجی اور ٹونگا کے دورے بھی شامل ہیں۔

جواب چھوڑیں