صحابہ اکرام ؓ کی شان میں گستاخی ناقابل برداشت۔مجالس عزاء میں انٹلیجنس حکام کومتعین کیاجائے۔علماء کا پولیس کمشنرسے مطالبہ

شہر کے ممتاز وجیدعلماء اکرام ومشائخین عظام نے ملعون کو انتباہ دیا کہ صحابہ اکرام ؓ اورامہات المومنین کی شان میں ذرابرابرکی بھی گستاخی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ صحابہ ؓ کے گستاخ ہمارے صبرکا امتحان نہ لیں۔ہم سب کچھ برداشت کرسکتے ہیں لیکن صحابہ اکرام ؓ اور امہات المومنین کی شان میں گستاخی اور دل آزاری کوکبھی برداشت نہیں کریںگے۔ علماء اکرام نے کمشنر پولیس انجنی کمار کوایک یادداشت پیش کرتے ہوئے کہاکہ پراناشہرمیں منعقدہونے والی مجالس اعزاء میں انٹلیجنس عہدیداروں کو متعین کریں تاکہ صحابہ اکرام ؓ کے خلاف گستاخانہ الفاظ کے استعمال کاپتہ لگاکران کے خلاف کاروائی کی جاسکے اورتمام ذاکرین کو گستاخی کے خلاف پابندسلاسل کریں۔ اور ’’تبرا‘‘ پر بھی پابندی عائد کی جائے ۔ مجالس کو رات 10:30بجے بند کرنے کے لئے پابند کیا جانا چاہئے ۔ بصورت دیگر ان کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے اور مجالس میں تقاریر کے لئے اندرونی حصہ میں صرف سائونڈباکس استعمال کی ہدایت دی جائے ۔امیرملت اسلامیہ مولانا محمدحسام الدین جعفرپاشاہ نے کہاکہ صحابہ اکرام ؓ سے وابستگی اورمحبت ہمارے ایمان کا جزہے ۔ امہات المومنین ہماری مائیںہیں۔ ہم آپ ؓ کی شان میں ذرابرابر کی گستاخی کوکبھی برداشت نہیں کریںگے۔ انہوں نے کمشنرپولیس سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ معلونین کوشان صحابہؓ میں گستاخی سے بازرکھیں ۔ہم کسی کوچھیڑیںگے نہیں اگرکوئی ہمیں چھیڑتاہے توہم اسے چھوڑیں گے نہیں۔ انہوںنے مسلمانوں کوتلقین کی ہے کہ وہ اپنے بچوں کو حضوراکرامؐ ‘صحابہ اکرام ؓ ‘امہات المومنین اوراہلبیت اطہار ؓ کی سیرت سے واقف کروائیں اور سیرت طیبہؐ کواپنی زندگی کا مشعل راہ بنائیں۔ مولانا رحیم الدین انصاری ناظم دارالعلوم حیدرآباد وصدر نشین اردو اکیڈیمی نے کہاکہ ملعون عباس علی رضوی کی جانب سے صحابہ اکرام ؓ اور امہات المومنین کی شان میں گستاخی سے مسلمانوں کی دلآزاری ہوئی ہے ۔ انہوںنے پرانا شہر میں رات بھر لائوڈاسپیکر کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کیااورکہاکہ بندکمروں کی مجالس میں گستاخانہ تقاریرپر کنٹرول کیا جائے۔ممتازعلماء اکرام آج شام کمشنر پولیس کی جانب سے اردو مسکن خلوت میں طلب کردہ مشاورتی اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔ مفتی خلیل احمد شیخ الجامعہ جامعہ نظامیہ ‘مولانا اولیاء حسینی ‘مولانا غیاث الدین رحمانی ‘مولانا سعیدقادری‘مولانا صفی احمد مدنی امیراہلحدیث ‘مولانا وقار پاشاہ ودیگر نے اپنی تقاریر میں صحابہ اکرام ؓ کی شان میں گستاخی کو ناقابل برداشت قراردیا۔کمشنر پولیس انجنی کمار نے اپنے خطاب میں کہاکہ سٹی پولیس‘ شہر کے پرامن ماحول کو مکدرکرنے کی کسی کوبھی اجازت نہیں دے گی اور کسی بھی گنہگار کی سرپرستی نہیں کرے گی اورنہ ہی اس کے ساتھ نرم رویہ اختیار کیا جائے گا۔ انہیں قانون کے مطابق جوبھی سزاہوگی ہم اس سزا کودلانے میں کوئی کسرنہیں چھوڑیں گے ۔ کمشنر پولیس نے کہاکہ علماء اکرام ہمارے لئے قابل احترام اورسرپرست کی حیثیت رکھتے ہیںعلماء اکرام کاہمیشہ ہمارے ساتھ بھرپور تعاون رہا ہے ۔ ہم علماء اکرام کے تعاون سے شہر میں امن وامان کی برقراری کویقینی بنائیں گے۔ کمشنرپولیس نے کہاکہ وہ تمام علماء کی تقاریر سے بہت متاثرہوئے ہیں۔ وہ قرآن حکیم کی تعلیمات سے بھی متاثرہیں۔ انہوںنے کہاکہ دنیا میں اچھے اور برے لوگ دونوں رہتے ہیں۔ اگرکوئی براشخص غلطی کرتاہے ہم بھی جوش میں آکر اس کے ہی انداز میں جواب دیں گے تویہ کوئی دانشمندی نہیںہے ۔ چنانچہ علماء اکرام اور مشائخین عظام سے اپیل ہے کہ وہ امن وامان کی برقراری میںپولیس کا تعاون کریں۔ قبل ازیں ایک موقع پر جبکہ اے سی پی کے بابورائو تقریر کررہے تھے اور شرکاء اجلاس سے برقراری امن کی اپیل کررہے تھے تب مولانا محمد حسام الدین جعفر پاشاہ برہم ہوگئے اور کہاکہ صحابہ کرام ؓ کی شان میں گستاخی کی جارہی ہے اورہم کوامن برقراررکھنے کا مشورہ دیاجارہا ہے ۔ مولانا اپنی نشست سے اٹھ کر جارہے تھے کہ کمشنر پولیس راماگنڈم وی ستیہ نارائنہ مولانا جعفر پاشاہ کوسمجھاکر انہیں اپنی نشست پر لانے میں کامیاب رہے ۔مولانا سید قبول پاشاہ شطاری معتمد مجلس علماء دکن کی دعاپراجلاس اختتام کوپہنچا۔ سیدمنیرالدین مختار نے شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر مولانا محمدحسام الدین جعفر پاشاہ نے حالیہ واقعہ میں بے قصور نوجوانوں کے خلاف درج کردہ مقدمات کوواپس لینے کمشنر پولیس انجنی کمارکی توجہ مرکوزکروائی جس پر کمشنر پولیس نے مناسب اقدامات کاتیقن دیا۔

جواب چھوڑیں