کسی مرکزی وزیر نے طوفان سے متاثرہ علاقوں کا دورہ نہیں کیا:این چندرا بابو نائیڈو

آندھرا پردیش کے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کسی مرکزی وزیر نے ریاست میں طوفان تتلی سے متاثرہ دواضلاع کا دورہ نہیں کیا ہے ۔ نائیڈو نے جمعہ کو تلگودیشم پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ، اسمبلی اور قانون ساز کونسل سے ٹیلی کانفرنس کے ذریعہ خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کسی مرکزی وزیر یا مرکزی حکومت کے قائد نے ہنوز طوفان سے متاثرہ اضلاع کا دورہ نہیں کیا ہے ۔ بعدازاں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے نائیڈو نے کہا کہ طوفان تتلی نے ریاست کے دو اضلاع میں زبردست تباہی مچائی ہے مگر اس کے باوجود مرکز کی جانب سے تاحال امداد وصول نہیں ہوئی ہے۔ مرکزی حکومت کے کسی قائد نے طوفان سے متاثرہ مقامات کا ابھی تک دورہ نہیں کیا ۔ تلنگانہ کے وزیر کے تارک راما راؤ نے راجمندری میں منعقدہ جناسینا پارٹی کے پروگرام میں شرکت کی مگر تلنگانہ کے نوجوان قائد کو طوفان متاثرین سے اظہار ہمدردی کیلئے وقت نہیں ملا۔ انہوں نے کہا کہ چار سیاسی جماعتیں وائی ایس آر سی پی ، کانگریس، بی جے پی اور جنا سینا، عوام میں تلگودیشم پارٹی کی بڑھتی مقبولیت سے خائف ہیں اور ٹی ڈی پی کی عوامی مقبولیت نے ان جماعتوں کو پریشان کررکھا ہے۔حسد اور دشمنی میں یہ جماعتیں، حکمراں جماعت ٹی ڈی پی کو غیر ضروری تنقید کا نشانہ بنا رہی ہیں۔ تلگودیشم پارٹی کو عوام کی تائید حاصل ہے اور یہی، پارٹی کی اصل طاقت ہے۔ انہوںنے کہا کہ آنے والے دنوں میں اپوزیشن جماعتیں، ٹی ڈی پی کو مزید نشانہ بنائیں گی اور پارٹی پر غیر ضروری الزامات عائد کرسکتی ہیں۔ چیف منسٹر نائیڈو نے پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ ، اسمبلی اور کونسل میں فہرست رائے دہندگان پر نظر ثانی کے بارے میں معلومات حاصل کیں اور منعقد شدنی کونسل انتخابات کے سلسلہ میں بوتھ کنوینرس کیلئے تربیتی اجلاس منعقد کرنے کے بارے میں بھی بات چیت کی ۔ چیف منسٹر نے دعویٰ کیا کہ اپوزیشن قائد وائی ایس آر کانگریس پارٹی جگن کی پدیاترا کو عوام کا ردعمل نہیں مل رہا ہے ۔ عوام، اب یہ جان چکی ہے کہ جگن کی پدیاترا سنجیدگی سے عاری ہے۔

جواب چھوڑیں