افغانستان میں پارلیمانی انتخابات‘ زبردست تشدد ۔30 ہلاک

افغانستان میں آج پارلیمانی انتخابات کے موقع پرتشدد کے زبردست واقعات میں30افراد ہلاک اورتقریباً140زخمی ہوگئے۔ سرکاری عہدیداروں نے یہ بات بتائی اور کہاکہ اِن انتخابات کے موقع پر زبردست ہنگامے ہوئے ۔ کئی پولنگ مراکز‘ کئی گھنٹے تاخیر سے کھولے گئے اور بعض مراکز تو فنی رکاوٹوں کے سبب اور عملہ کی عدم دستیابی کے سبب کھولے ہی نہیں گئے۔ موصولہ اطلاعات میں کہا گیا ہے کہ کابل کے ایک پولنگ مرکز کے اندر ایک خود کش بم بردار نے اپنے آپ کو دھماکہ سے اُڑالیا۔ کم از کم 15افراد ہلاک اور 20زخمی ہوگئے۔ پولیس نے یہ بات بتائی اور کہاکہ کابل کے طول عرض میں متعدد ہلاک ہوئے ‘ تقریباً ایک سو زخمی ہوگئے۔ کابل میں ہوئے دھماکہ کی ذمہ داری ‘ فوری طورپر کسی گروپ نے قبول نہیں کی ہے لیکن قبل ازیں طالبان نے بتایاکہ اُس نے اِس جنگ زدہ ملک کے طول عرض میں ’’ فرضی انتخابات‘‘ کے موقع پر زائد از 300حملے کئے ہیں۔ موصولہ اطلاعات میں کہا گیا کہ شمالی شہرقندوز میں تشدد کے سبب رائے دہی میں خلل پڑا۔ صوبہ دارالحکومت پر زائد از 20راکٹوں کی بارش کے سبب تین افراد ہلاک اور 49زخمی ہوگئے ۔ محکمہ صحت کے ایک عہدیدار نے یہ بات بائی۔

جواب چھوڑیں