آر کے پچوری کیخلاف جنسی ہراسانی کے الزامات وضع

دہلی کی ایک عدالت نے آج ممتاز ماہر ماحولیات آر کے پچوری کے خلاف جنسی ہراسانی کے الزامات وضع کرتے ہوئے مقدمہ کی راہ ہموار کردی ۔ یہ مقدمہ 4 جنوری 2019ء کو شہادتوں کو قلمبند کیے جانے کے ساتھ شروع ہوگا۔ قبل ازیں میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ چارو گپتا نے 2015ء میں ایک خاتون رفیق کار کو ہراسانی سے متعلق الزامات پچوری کے خلاف وضع کیے ۔ دفاعی کونسل آشیش دکشت نے عدالت سے درخواست کی کہ وہ کارروائی میں تیزی لائے کیوںکہ اس کے زیر التوا ہونے سے 78 سالہ پچوری اور ان کے ارکانِ خاندان کو مصائب کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ پچوری نے بے قصور ہونے کا دعویٰ کیا اور مقدمہ لڑنے پر آمادگی ظاہر کی ۔ عدالت 4 جنوری کو پچوری کے خلاف استغاثہ کے گواہوں کی سماعت کرے گی۔ گذشتہ سماعت کے دوران عدالت نے خاتون کے ساتھ زبردستی کرنے ، پیچھا کرنے اور بے جا طور پر روکے رکھنے کے الزامات کالعدم کردیے تھے ۔ دہلی پولیس نے ’’دی انرجی اینڈ ریسورسس انسٹی ٹیوٹ ‘‘ (ٹی ای آر آئی) کے سابق سربراہ کے خلاف مقدمہ درج کرتے ہوئے یہ الزامات عائد کیے تھے ۔ پچوری کو 2015ء میں اقوام متحدہ کے بین حکومتی پینل برائے تبدیلی ٔ ماحولیات کے چیرپرسن کے عہدہ سے مستعفی ہونا پڑا تھا اور پی ای آر آئی سے ہٹنا پڑا تھا۔ پچوری نے اپنے خلاف تمام الزامات کی تردید کی ہے ۔

جواب چھوڑیں