ٹی آرایس کیخلاف راہول کی تقریر کامتن تیار ’’اسکرپٹ‘‘:کے تارک راماراو

کارگذاروزیر انفارمیشن وٹکنالوجی کے تارک رامارائو نے صدر کانگریس راہول گاندھی کی جانب سے حکومت تلنگانہ کے خلاف دیئے گئے بیان کی مذمت کی اور کہاکہ پارٹی قائدین نے راہول گاندھی کو تقریر کے لئے تیار اسکرپٹ فراہم کی تھی ۔ اس اسکرپٹ کا مطالعہ کرکے وہ حکومت کے خلاف بیان دے چکے ہیںجو حقائق پرمبنی نہیںہے ۔ کے تارک راما رائو نے آج تلنگانہ بھون میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ راہول گاندھی نے بھینسہ اور کاماریڈی میںجلسہ عام کے دوران حکومت پر امبیڈکر پر انہیتا چیوڑلہ پراجکٹ کا نام تبدیل کرنے کا غلط بیان دیاہے جبکہ حکومت نے ڈاکٹر بی آر امبیڈکرکانام پرانہیتا چیوڑلہ پراجکٹ سے نہیں ہٹایا ہے ۔ کے ٹی آر نے کانگریس پر ڈاکٹربی آرامبیڈکر کی عوامی خدمات کو فراموش کردینے کا الزام عائد کیا۔ سابق کانگریس کے دورحکومت میں ڈاکٹربی آر امبیڈکر کو بھارت رتن ایوارڈتک نہیں دیا گیا تھا۔ جبکہ سابق وزیر اعظم وی پی سنگھ نے ڈاکٹر بی آر امبیڈکرکوبھارت رتن ایوارڈ دینے کا اعلان کیا تھا۔ انہوںنے کہاکہ کانگریس قائدین نے دہلی میں سابق وزیر اعظم پی وی نرسمہا رائو کی سمادھی بنانے کی اجازت نہیں دی تھی ۔ جبکہ ٹی آرایس دورحکومت میں تلنگانہ کے اہم سیاسی قائدین کواہمیت دی گئی اور ان کے نام سے یونیورسٹی ‘اضلاع قائم کئے گئے ہیں۔ تلنگانہ میں کسانوں کی خودکشی کے واقعات کے لئے کانگریس کو ذمہ دار قراردیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ کانگریس دورحکومت میں آبپاشی پراجکٹس کی تعمیر کے لئے کوئی اقدامات نہیں کئے گئے تھے جبکہ ٹی آرایس کے 4سال کے دور میں 25لاکھ ایکڑ اراضی کوسیراب کرایا گیا ہے ۔انہوںنے کہاکہ راہول گاندھی نے حکومت پر کالیشورم پراجکٹ کے تعمیری کام کی لاگت ایک لاکھ کروڑ تک اضافہ کرنے کاالزام بھی عائد کیاہے ۔ انہوں نے کہاکہ کانگریس کے دورحکومت میں پرانہیتا چیوڑلہ پراجکٹ کے تعمیری کام کی لاگت 17 ہزار کروڑسے اضافہ کرکے 43ہزار کروڑ کردی گئی تھی ۔ جبکہ ٹی آرایس حکومت نے کالیشورم پراجکٹ کے تعمیری کام کیلئے 80ہزار کروڑروپے خرچ کررہی ہے ۔

جواب چھوڑیں