روپے کی گرتی قدر کو روکنے میں مرکز ناکام:چندرا بابو نائیڈو

آندھرا پردیش کے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے وزیر اعظم نریندر مودی کی زیر قیادت این ڈی اے حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے الزام عائد کیا کہ مرکز، روپے کی قدر میں گراوٹ اور پڑول کی بڑھتی قیمتوں کو روکنے میں ناکام رہا ہے ۔ گرام درشنی کے موقع پر ضلع کلکٹرس، نوڈل آفیسرس اور عہدیداروں کے ساتھ ٹیلی کانفرنس کے ذریعہ خطاب کرتے ہوئے چیف منسٹر چندرا بابو نائیڈو نے جمعرات کو یہ بات کہی ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے نائیڈو نے الزام عائد کیا کہ مرکز نے سی بی آئی اور آر بی آئی کی خود مختاری کو ختم کردیا ہے جبکہ انکم ٹیکس محکمہ اور انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کو حریف اپوزیشن جماعتوں کو ہراساں کرنے کیلئے استعمال کیا جارہا ہے ۔ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافہ سے اشیائے ضروریہ کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں۔ نائیڈو نے الزام عائد کیا کہ مرکز کے حکمرانوں میں عدم تحفظ اور عدم رواداری کے احساس میں اضافہ ہوا ہے ۔ انہوںنے عوام پر زور دیا کہ وہ ملک اور جمہوریت کے تحفظ کیلئے اٹھ کھڑے ہوں۔ مرکز کی ناقص حکمرانی کا موثر جواب کرناٹک کے رائے دہندوں نے ضمنی انتخابات میں دے دیا ہے ۔ نائیڈو نے یہ بات کہی ۔ چیف منسٹر نے تفصیل سے بتایا کہ مرکز کے عدم تعاون کے باوجود آندھرا پردیش ، ترقی کررہا ہے۔ انہوںنے کہا کہ ترقی کی تفصیلات کو اجاگر کرنے کیلئے گرام درشنی، ایک بہتر پلیٹ فارم ثابت ہوگا ۔ ریاست کی حکومت، عوام کی ترقی کیلئے بہت کچھ کررہی ہے ۔ عہدیداروں کو چاہئے کہ وہ مواقع کا بہتر طور پر استعمال کریں ۔ انہوںنے کہا کہ تتلی طوفان کی تباہی کے25یوم بعد بھی مرکز کی جانب سے نقصانات کے معاوضہ کی رقم جاری نہ کئے جانے کی وجہ سے حکومت اے پی کو شدید مایوسی ہورہی ہے ۔ انہوںنے کہا کہ حکومت کی خدمات پر عوام کے اظہار اطمینان کی سطح72 فیصد سے بڑھ کر77 فیصد ہوگئی ہے ۔ 90 فیصد عوام کے اظہار اطمینان کے نشانہ کے حصول کیلئے عہدیداروں کو سخت محنت کرنے کی ضرورت ہے ۔ انہوںنے کہا کہ ترقیاتی کاموں کے نتائج، عوام کو دکھائی دینے لگے ہیں۔

جواب چھوڑیں