سی بی آئی سربراہ کی سی وی سی سے ملاقات

سی بی آئی ڈائرکٹر آلوک ورما نے آج سنٹرل ویجلنس کمشنر (سی وی سی) کے وی چودھری سے ملاقات کی اور باور کیا جاتا ہے کہ انہوں نے اپنے ڈپٹی اور تحقیقاتی ایجنسی کے خصوصی ڈائرکٹر راکیش استھانہ کی جانب سے ان کے خلاف عائد کردہ کرپشن کے الزامات کی تردید کی ہے۔ ورما تقریباً ایک بجے دن سی وی سی کے دفتر پہنچے اور چودھری کے علاوہ ویجلنس کمشنر شرد کمار سے ملاقات کی۔ عہدیداروں نے مزید تفصیلات نہیں بتائیں۔ واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے 26 اکتوبر کو سنٹرل ویجلنس کمیشن سے کہا تھا کہ وہ استھانہ کی جانب سے ورما کے خلاف عائد کردہ الزامات کی اندرون 2 ہفتہ تحقیقات مکمل کرلے۔ حکومت نے ورما اور استھانہ دونوں کو رخصت پر بھیج دیا ہے۔ کمیشن نے حال ہی میں اہم کیسس کی تحقیقات کرنے والے چند سی بی آئی عہدیداروں سے پوچھ تاچھ کی تھی جن کے نام استھانہ کی شکایت میں سامنے آئے تھے۔ عہدیداروں نے بتایا کہ انسپکٹر سے لے کر سپرنٹنڈنٹ پولیس رینک تک کے عہدیداروں کو طلب کیا گیا اور سی وی سی کے ایک سینئر عہدیدار کے روبرو ان کے بیانات قلمبند کئے گئے۔ جن عہدیداروں نے اپنے بیانات قلمبند کرائے ان میں وہ عہدیدار بھی شامل ہیں جنہوں نے معین قریشی رشوت کیس ‘ آئی آر سی ٹی سی اسکام جس میں سابق وزیر ریلوے لالو پرساد یادو ملوث ہیں‘ مویشیوں کی اسمگلنگ کا کیس جس میں ایک سینئر بی ایس ایف عہدیدار کو کیرالا میں نقد رقم کی گڈیوں کے ساتھ گرفتار کیا گیا تھا‘ کی تحقیقات کی تھیں۔ سپریم کورٹ نے ہدایت دی تھی کہ ورما کے خلاف الزامات کی تحقیقات سپریم کورٹ کے ریٹائرڈ جج جسٹس اے کے پٹنائک کی زیرنگرانی ہوں گی اور یہ استثنیٰ ایک ہی مرتبہ دیا جارہا ہے۔ واضح رہے کہ ورما نے انہیں ڈیوٹی سے ہٹانے اور رخصت پر بھیجنے حکومت کے فیصلہ کو چیلنج کیا ہے۔

جواب چھوڑیں