عظیم اتحاد، نشستوں کی تقسیم کے فارمولہ کو قطعیت: آر سی کنتیا

کانگریس کی زیر قیادت عظیم اتحاد میں شامل جماعتوں کے ساتھ نشستوں کی تقسیم کے مسئلہ کو حل کرلیاگیا ہے ۔ کانگریس کے ایک قدآور قائد نے جمعرات کو یہ بات بتائی ۔ تلنگانہ پردیش کانگریس کے تنظیمی امور کے انچارج آر سی کنتیا نے پی ٹی آئی کو بتایا کہ نشستوں کی تقسیم کے امور کو قطعیت دی جاچکی ہے ۔ صدر کانگریس راہول گاندھی کی منظوری کے بعد اس کا اعلان کردیاجائے گا ۔ نشستوں کی تقسیم کی بابت کانگریس کی حلیف جماعتوں تلگودیشم پارٹی، تلنگانہ جنا سمیتی، اور سی پی آئی کے ساتھ ایک ہفتہ طویل بات چیت آخر کار ختم ہوچکی ہے تاہم کنتیا نے یہ نہیں بتایا کہ کانگریس ، کتنی نشستوں سے مقابلہ کرے گی مگر پارٹی ذرائع نے اشارہ دیا ہے کہ کانگریس90 نشستوں سے مقابلہ کرسکتی ہے ۔ تلگودیشم پارٹی کے ایک قائد نے دعویٰ کیا کہ ان کی پارٹی کو 14 سے18 نشستیں دی جائیں گی ۔ تلنگانہ جنا سمیتی کے بانی پروفیسر کودنڈا رام نے ادعا کیا ہے کہ کانگریس نے ان کی جماعت کو8 تا10 نشستیں دینے کا پیشکش کیا ہے جبکہ ہم ، کم از کم 12 نشستوں کا مطالبہ کررہے ہیں۔ چند رکاوٹیں ضرور ہیں مگر نشستوں کی تقسیم کے فارمولہ کو قطعیت دینے میں تاخیر پر ہم فکر مند ضرور ہیں۔ تاخیر ہی سب سے بڑا مسئلہ ہے ۔ سی پی آئی کو تین نشستوں کا پیشکش کیا گیا ہے۔ سی پی آئی کے جنرل سکریٹری ایس سدھاکر ریڈی نے کہا کہ کل منعقدشدنی پارٹی کے مجلس عاملہ کے اجلاس میں اس پیشکش پر غور کیا جائے گا ۔ اس کے علاوہ پارٹی کو دو ایم ایل سی نشستیں دینے کا بھی پیشکش کیا گیا ہے۔ انہوںنے کہا کہ موجودہ حالات کا تقابل کیا جائے تو یہ پیشکش بہتر ہے مگر پارٹی کیڈر کا احساس ہے کہ مزید دو نشستیں دی جانی چاہئے ۔

جواب چھوڑیں