چندرا بابو نائیڈو،19سوالات کے جوابات دیں ۔ریاستی وزیر ہریش راؤ کا مطالبہ

کارگذار ریاستی وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ نے تلگودیشم کے قومی صدر و چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو سے مطالبہ کیا کہ وہ ٹی آر ایس کی جانب سے پوچھے گئے19 سوالات کے جوابات دینے کے بعد اپنی پارٹی کو تلنگانہ اسمبلی انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دیں ۔ انہوں نے اس سلسلہ میں سوالات کی کاپی این چندرا بابو نائیڈو کو روانہ کرنے کا اعلان کیا ۔ ٹی ہریش راؤ نے آج تلنگانہ بھون میں اخباری نمائندوں کو بتایا کہ تلگودیشم پارٹی کی جانب سے اسمبلی انتخابات میں حصہ لینے پر ریاست کے عوام میں برہمی دیکھی جارہی ہے ۔ چندرا بابو نائیڈؤ کو فوری عوام کے اعتراض و برہمی کو دور کرنا چاہئے ۔ انہوںنے کہا کہ چندرا بابو نائیڈؤ نے ہمیشہ تلنگانہ کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کی۔ سابق چیف منسٹر وائی ایس آر کے دور حکومت میں بھی چندرا بابو نائیڈو نے پالمور رنگاریڈی پراجکٹ کی تعمیر کے خلاف احتجاجی دھرنا منظم کیا تھا ۔ وہ آندھرا پردیش کے چیف منسٹر کے عہدہ پر فائز ہونے کے بعد پالمور رنگاریڈی پراجکٹ کے تعمیری کام میں رکاوٹیں پیدا کرچکے ہیں۔ اس سلسلہ میں انہوںنے مرکزی حکومت کو مکتوب بھی روانہ کیا تھا ۔ راؤ نے استفسار کیا کہ چندرا بابو نائیڈو کے مخالف پالمور پراجکٹ پر آیا سیاسی عظیم اتحاد کے قائدین کو ضلع محبوب نگر کے عوام کے ووٹ مانگنے کا حق حاصل ہے ؟ ٹی آر ایس حکومت نے کالیشورم پراجکٹ کے تعمیری کام کیلئے مرکزی حکومت سے اجازت حاصل کی تھی لیکن چندرا بابو نائیڈو نے مرکزی حکومت کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے کالیشورم پراجکٹ کے تعمیری کام کی اجازت نہ دینے کی درخواست کی تھی انہوںنے کہا کہ تلنگانہ تلگودیشم پارٹی چند اسمبلی حلقوں سے کامیابی حاصل کرنے کے بعد تلنگانہ کی ترقی میں رکاوٹیں پیدا کرے گی ۔ ہریش راؤ نے کہا کہ نائیڈو نے مرکزکی بی جے پی حکومت پر دباؤ ڈالکر ضلع کھمم کے7 منڈلوں کے آندھرا پردیش میں انضمام کیلئے آرڈیننس جاری کروایا تھا ۔ انہوںنے کہا کہ امراوتی میں اسمبلی کی عمارت تعمیر کے باوجود اے پی حکومت شہر حیدرآباد میں اسمبلی بلڈنگ کا حصہ خالی کرنے میں ٹال مٹول کی پالیسی اختیار کررہی ہے ۔ انہوںنے کہا کہ سابق نظام حیدرآباد کے دور حکومت میں تعمیر کردہ عمارتوں میں اے پی کو حصہ دینے کے مطالبہ پر عدالت میں مقدمہ زیر دوراں ہے ۔ انہوںنے کہا کہ تلنگانہ کے عوام باشعور ہیں اور انتخابات میں عظیم اتحاد کو سبق سکھائیں گے۔

جواب چھوڑیں