کے 9 وجرا اور ہوئٹزر توپیں ہندوستانی فوجی بیڑہ میں شامل

ہندوستانی فوج نے جمعہ کے دن دیولالی آرٹیلری سنٹر (مہاراشٹرا) میں وزیر دفاع نرملا سیتارمن کی موجودگی میں کے 9 وجرا اور ایم 777 ہوئٹزر توپیں حاصل کیں۔ انتہائی ہلکی ایم 777 ہوئٹزر آرٹیلری گنس کو برطانوی دفاعی کمپنی بی اے ای سسٹمس نے تیار کیا ہے جبکہ کے 9 وجرا کو ہندوستانی لارسن اینڈ ٹوبرو ڈیفنس نے بنایا ہے۔ وزارت ِ دفاع کے ترجمان کرنل امن آنند نے بتایا کہ فوج کو آئندہ 2 سال میں 4366 کروڑ کی 100 کے 9 اور 5 ہزار کروڑ کی 245 ایم 777 توپیں حاصل ہوں گی۔ ان توپوں کو ستمبر میں فوج کو دینا تھا لیکن اس میں تاخیر ہوئی۔ تقریب میں مملکتی وزیر دفاع سبھاش بھامرے اور ہندوستانی فوج کے سربراہ جنرل بپن راوت نے بھی شرکت کی۔ پی ٹی آئی کے بموجب فوجی توپ خانہ کی طاقت بڑھانے وزیر دفاع نرملا سیتارمن نے جمعہ کے دن 3 بڑے آرٹیلری گن سسٹم فوجی بیڑہ میں شامل کئے۔ ان میں M777A2 الٹرا لائٹ ہوئٹزر ‘ کے 9 وجرا سیلف پروپیلڈ گن اور کمپوزٹ گن ٹوئنگ وہیکل شامل ہیں۔ دیولالی فیلڈ فائرنگ رینج میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر دفاع نے کہا کہ آئندہ چند سال میں ایسے کئی اور سسٹم فوج کو دیئے جائیں گے۔ یہ توپیں بوفورس کے بعد یعنی لگ بھگ 30 برس بعد فوجی بیڑہ میں شامل ہوئی ہیں۔ 155 ملی میٹر کی ہوئٹزر توپیں امریکہ سے خریدی گئی ہیں۔ یہ خریداری حکومت سے حکومت کی سطح پر ہوئی ہے۔ انہیں ہندوستان میں بی اے ای سسٹمس ‘ مہندرا ڈیفنس کی شراکت داری کے ساتھ اسمبل کرے گی۔ یہ توپ خانہ کافی ہلکا ہے اور یہ امریکہ‘ کینیڈا‘ آسٹریلیا اور بعض دیگر ممالک میں زیر استعمال ہے۔ ہوئٹزر توپیں افغانستان اور عراق میں اپنا لوہا منواچکی ہیں۔ پہلی 10 کے 9 وجرا توپیں جنوبی کوریا سے منگوائی گئی ہیں۔ انہیں ایل اینڈ ٹی نے ہندوستان میں اسمبل کیا ہے۔ مابقی 90 توپیں بڑی حد تک ہندوستان میں بنیں گی۔ ان توپوں سے مغربی سرحد پر ہندوستانی فوج کی توپ خانہ چلانے کی صلاحیت کافی بڑھ جائے گی۔

جواب چھوڑیں