غزہ میں مشتعل فلسطینی مظاہرین نے قطری سفیر کو بھگا دیا

فلسطین میں قطر کے سفیر محمد العمادی گذشتہ روز غزہ کی پٹی میں داخل ہوئے تو شہری ان کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے۔ مشتعل مظاہرین نے العمادی کے قافلے پر سنگ باری کی جس کے بعد انہیں مشرقی غزہ سے بھاگنا پڑا۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق العمادی مشرقی غزہ کی پٹی میں فلسطینی مظاہرین کے لگائے گئے احتجاجی کیمپ کے دورے پر آئے تھے مگر مظاہرین نے انہیں وہاں داخل نہ ہونے دیا اور انہیں وہاں سے مار بھگایا۔سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصاویر اور ایک فوٹیج میں مشتعل فلسطینیوں کو العمادی کے قافلے پر سنگ باری کرتے اور ان کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔مقامی ذرائع کے مطابق غزہ میں حماس کے زیرانتظام سیکیورٹی عہدیداروں نے قطری سفیر کے قافلے پر سنگ باری کرنے والے متعدد افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔یہ دوسرا موقع ہے جب العمادی کے قافلے پر غزہ میں سنگ باری کی گئی اور انہیں ہاں سے مار بھگایا گیا۔ قطر کو حماس کا حامی اور معاونت کار تصور کیا جاتا ہے۔قطری سفیر کے قافلے پر حملہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب چند روز قبل قطر کی جانب سے غزہ میں حماس کے سرکاری ملازمین کی تن خواہوں کے لیے 15 ملین ڈالر کی رقم ادا کی گئی تھی۔ یہ رقم اسرائیل اور تحریک فتح کے ذریعے حماس تک پہنچائی گئی۔ قطرنے غزہ کی پٹی میں ملازمین کی تنخواہوں اور دیگر منصوبوں کے لیے آئندہ چھ ماہ کے دوران 90 ملین ڈالر کی رقم ادا کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جواب چھوڑیں