اسمبلی انتخابات کااعلامیہ جاری

تشکیل تلنگانہ کے بعد اسمبلی انتخابات کا پہلا اعلامیہ آج جاری کردیاگیا ۔ چیف الیکٹورل آفیسرڈاکٹررجت کمار نے پیر کو تلنگانہ اسمبلی کے 119 حلقوں کے انتخابات کے لئے اعلامیہ جاری کیاہے ۔ اعلامیہ کی اجرائی کے ساتھ ہی پرچہ نامزدگیاںقبول کی جائیں گی جس کا سلسلہ 19نومبر تک جاری رہے گا۔ 12 تا19 نومبر کے دوران 11بجے دن تا 3بجے سہ پہر نامزدگیاں قبول کی جائیں گی ۔ اعلامیہ کے بموجب ریاست میں 7دسمبر کو رائے دہی ہوگی جبکہ 11دسمبر کو ووٹوں کی گنتی کی جائے گی۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہے کہ سابق اسمبلی انتخابات اپریل ‘مئی 2014 میں منعقد ہوئے تھے اس وقت ریاست آندھراپردیش کی تقسیم عمل میں نہیں آئی تھی ۔الیکشن کے بعد آندھراپردیش تنظیم جدید ایکٹ کے مطابق آندھراپردیش کو تقسیم کرتے ہوئے تلنگانہ کی تشکیل عمل میں لائی گئی تھی ۔ اے پی کی تقسیم کے وقت ‘تلنگانہ 10 اضلاع اور 119اسمبلی حلقوں پرمشتمل تھا۔ اس اسمبلی کوچیف منسٹر کے چندرشیکھر رائو نے 6 ستمبرکوتحلیل کردیاتھا۔ اسمبلی کے نئے ارکان کے انتخاب کے لئے آج اعلامیہ جاری کردیاگیا ہے ۔ اعلامیہ کی اجرائی سے قبل رجت کمارنے اس سلسلہ میں ریاستی گورنر ای ایس ایل نرسمہن سے اس کی منظوری حاصل کی ۔ ریاست کے 31اضلاع کے کلکٹرس ‘ متعلقہ حلقوں کے انتخابات کے لئے گزٹ اعلامیہ جاری کردیں گے۔ پی ٹی آئی کے بموجب الیکشن کمیشن نے 7دسمبر کو منعقدشدنی تلنگانہ اسمبلی انتخابات کا اعلامیہ پیر کو جاری کردیا ہے ۔ اعلامیہ کے بموجب 12سے 19 نومبر تک پرچہ نامزدگیاں قبول کی جائیں گی ۔جبکہ کاغذات نامزدگیوں کی جانچ پڑتال 20 نومبر کو کی جائے گی ۔ کاغذات نامزدگی واپس لینے کی آخری تاریخ 22 نومبرمقرر کی گئی ہے ۔ قبل ازیں چیف الیکٹورل آفیسر کے دفتر سے جاری اطلاعات کے مطابق ریاست میں رائے دہندوںکی جملہ تعداد میں 9لاکھ تک کی کمی آئی ہے ۔ اب جملہ رائے دہندوں کی تعداد 2.73 کروڑ بتائی گئی ہے ۔ ان 2.73 کروڑ رائے دہندوں کے لئے ریاست بھر میں 32,574 مراکز رائے دہی بنائے گئے ہیں جہاں یہ ووٹرس حق رائے دہی سے استفادہ کریں گے۔ ضرورت پڑنے پر مزید پولنگ بوتھس قائم کئے جاسکتے ہیںمگر اس کا انحصار ووٹرس کی تعداد پررہے گا۔ الیکشن کمیشن نے جمعہ کو تلنگانہ میں بھی 12نومبرسے تقریباً ایک ماہ تک کے لئے اکزٹ پولس کی اشاعت ونشریات پرامتناع عائد کردیا ہے ۔ کارگذار چیف منسٹر وٹی آرایس سربراہ کے سی آر نے اتوار کوپارٹی امیدواروں کا اجلاس طلب کیا تھا جس میں انہوں نے پارٹی امیدواروں میں بی فارمس تقسیم کئے ۔ بتایا جاتاہے کہ کے چندر شیکھررائو 14نومبرکواپنا پرچہ نامزدگی داخل کریںگے وہ گجویل سے انتخاب لڑرہے ہیں۔ واضح رہے کہ ٹی آرایس نے 119 کے منجملہ 107 حلقوں سے پارٹی امیدواروں کے ناموں کا بہت پہلے اعلان کردیا ہے ۔ جبکہ مہاکوٹمی میں شامل جماعتوں کانگریس ‘ٹی ڈی پی ‘ ٹی جے ایس اور سی پی آئی نے اپنے امیدواروں کے ناموں کا ہنوزاعلان نہیں کیاہے ۔

جواب چھوڑیں