شیوسینا کو ایودھیا میں ریالی کی اجازت نہیں ملی۔پارٹی صدر ادھو ٹھاکرے کا کل دورہ

شیوسینا نے ضلع انتظامیہ سے اجازت ملنے میں ناکامی کے بعد اپنی 25 نومبر کی مجوزہ ریالی مبینہ طورپر منسوخ کردی ہے۔ بہرحال ایک سینئر پارٹی قائد نے بتایا کہ پارٹی نے کوئی اجازت نہیں مانگی تھی۔ دیگر افراد نے اس دعویٰ کی تردید کی ہے۔ شیوسینا سربراہ ادھو ٹھاکرے24 نومبر کو پہلی مرتبہ اپنے حامیوں کے ساتھ ایودھیا کا دورہ کریں گے۔ یہ دورہ اتفاقاً 25 نومبر کو وی ایچ پی کی دھرم سبھا کے ساتھ ہوتا جو اَب منسوخ ہوچکی ہے۔ دھرم سبھا ‘ ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کے لئے حکومت سے قانون سازی کا مطالبہ کرنے والی تھی ۔توقع تھی کہ تقریباً ایک لاکھ افراد پریکرما مارگ میں بڑے بھکت مل گراؤنڈ پر منعقد ہونے والی اس ریالی میں شرکت کرتے۔ شیوسینا کے رکن پارلیمنٹ سنجے راوت نے جو گذشتہ چند دن سے یہاں مقیم ہیں‘ انہوں نے آج بتایا کہ شیوسینا نے ضلع انتظامیہ سے کسی ریالی کی اجازت نہیں لی ۔ بہرحال شیوسینا اترپردیش یونٹ کے صدر انیل سنگھ نے متضاد بیان دیتے ہوئے کہا کہ پہلے انہوں نے رام کتھا پارک اوربعدازاں فیض آباد شہر میں واقع گلاب باڑی میں ریالی کی اجازت مانگی جو متنازعہ مقام سے تقریباً 10 کیلو میٹر دور ہے لیکن حکام نے نظم وضبط کے مسائل پیدا ہونے کا حوالہ دیتے ہوئے اجازت دینے سے انکار کردیا۔ راوت نے پیر کے روز چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ سے بھی ملاقات کی تھی تاکہ انہیں ایودھیا میں حکام سے اجازت حاصل ہونے میں سینکوں کو درپیش مسائل سے واقف کراسکیں تاہم اس سے کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ اسی دوران شیوسینا قائدین کے مطابق ادھو ٹھاکرے 24 نومبر کی دوپہر خصوصی پرواز کے ذریعہ ممبئی سے ایودھیا پہنچیں گے اور سادھو سنتوں سے ملاقات کریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *