طلبہ و نوجوان، بہتر کردار کے حامل قائد کا انتخاب کریں ۔کے ٹی آر کا مشورہ

کارگذار وزیر کے تارک راما راؤ نے آج طلبہ برادری پر زور دیا کہ وہ حق رائے دہی کے بنیادی حق سے استفادہ کرتے ہوئے اپنے حلقہ سے بے داغ اور بہتر قائدین کو منتخب کریں۔ شہر کے مضافات دولا پلی میں ملاریڈی انجینئرنگ کالج میں منعقدہ ’’ منا حیدرآباد، منااَندری حیدرآباد‘‘ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ کئی آئی ٹی کمپنیوں نے جن میں گوگل ، ایپل، مائیکرو سافٹ فیس بک اور امیزان شامل ہیں حیدرآباد میں اپنے دوسرے بڑے مراکز قائم کئے ہیں ۔ جن کی مدد سے 7لاکھ مقامی نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم ہوئے ہیں۔ کے چندر شیکھر راؤ کی رہنمائی اور ان کی سخت مساعی کے سبب یہ نتائج حاصل ہوئے ہیں۔ ملک کے مختلف ریاستوں ومقامات سے افراد، شہر حیدرآباد میں مستقل طور پر قیام پذیر ہیں۔ حکومت ان تمام افراد کی ترقی کو یقینی بنانے کے اقدامات کرچکی ہے ۔ لائف سائنس سکیٹر کے بارے میں کے ٹی آر نے کہا کہ حیدرآباد، لائف سائنس کا ہب بن چکا ہے اور یہ شہر ، عالمی ویاکسین کے مرکز کے طور پر اپنی شناخت بنا چکا ہے ۔ دنیا بھر میں استعمال ہونے والے35 فیصد ٹیکے شہر حیدرآباد میں تیار کئے جاتے ہیں۔ انہوںنے مزید کہا کہ ٹی آر ایس حکومت،ریاست میںلائف سائنس انڈسٹریل کلسٹرس کو فروغ دینے کے عہد پر برقرار رہے گی ۔ انہوںنے کانگریس اور تلگودیشم دور حکومتوں میں شہر میں کرفیو کے دور کا تذکرہ کیا اور کہا کہ گذشتہ ساڑھے چار برسوں کے دوران دونوں شہر حیدرآباد اور سکندرآباد میں چار سیکنڈ کیلئے کرفیو نافذ نہیں کیا گیا۔ انہوں نے طلبہ کو ٹی آر ایس حکومت کی اسکیمات ،ر عیتو بندھو، رعیتو بیمہ، مشن کاکتیہ اور دیگر فلاحی اقدامات سے واقف کرایا ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کانگریس برسر اقتدار آئے گی تو پھر 6ماہ میں ریاست کا ایک چیف منسٹر بنے گا ۔ الیکشن میں کامیابی حاصل کرنا کانگریس کا دن کا خواب ہے ۔ اس پروگرام میں ٹی آر ایس میڑچل کے امیدوار ملا ریڈی بھی موجود تھے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *