کانگریس کی کامیابی پر ریاست کی ترقی متاثر ہوگی۔کے سی آر کا الزام

کارگذار چیف منسٹر کے چندرشیکھر رائو نے آج خانہ پور،ایچوڑا،نرمل میں انتخابی جلسوں سے خطاب کے بعد بھینسہ پہنچے ان کے ہمراہ رکن پارلیمان ناگیش ،ایس وینوگوپال چاری ،کے علاوہ دیگر قائدین موجودتھے ۔بھینسہ پہنچنے پرٹی آریس اُمیدوار جی وٹھل ریڈی کے علاوہ دیگر قائدین نے ان کا استقبال کیا ۔ پارڈی بائی پاس روڈ پر منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کے سی آر نے کہاکہ ہم نے عوام سے جو وعدے کئے تھے ان وعدوںسے زیادہ کردکھایا ہے ۔اور میرے ساڑھے چار سالہ دورحکومت میں عوام کے تمام طبقات خوشحال ہیں ۔ تلنگانہ کو پچھلے کئی سالوں سے آندھرائی حکمران، کانگریس اور ٹی ڈی پی لوٹ رہے تھے لیکن میں نے ایک سنہراتلنگانہ قائم کیا ۔میرے دوراقتدار میں میں نے کسانوںکو24 گھنٹے بجلی فراہم کی ہے ۔اگر کانگریس دوبارہ اقتدار میںآئے گی تو ریاست میں برقی بحران پیدا ہوگا انہوںنے کانگریس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کانگریس جب اقتدارمیںتھی تب اُس نے عوام کیلئے کچھ نہیںکیا ۔ انہوںنے کہا کہ ٹی آرایس حکومت نئے گرام پنچایت قائم کررہی ہے جس کے تحت حلقہ مدہول میں 87؍گرام پنچایت قائم کیئے جارہے ہیں جس میں تانڈوں کو بھی شامل کیا گیا ہے تاکہ تمام کے ساتھ انصاف کیا جاسکے ۔اس کے علاوہ گڈناواگو پراجکٹ کو ایس آر ایس پی سے منسلک کرتے ہوئے اور ایس آریس پی کو کالیشورم پراجکٹ سے جوڑا جائیگا جس کی وجہہ سے سال کے 365؍دن پانی کی فراہمی رہے گی۔انہوںنے کانگریس اور تلگودیشم کو سخت نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ یہ دونوں ایک عظیم اتحاد بناتے ہوئے تلنگانہ عوام کو گمراہ کر نے کی کوشش کررہے ہیں جبکہ یہ دونوں تلنگانہ کے غدار ہیں عوام کو چاہیئے کہ وہ ایسے غداروں کوسبق سکھائیں ۔انہوںنے کہا کہ وٹھل ریڈی اپنے والد گڈنا کے نقشہ قدم پر چلتے ہوئے یہاں کی ترقی کیلئے متحرک ہیں انہوںنے اردومیں تقریر کرتے ہوئے مسلمانوں سے کہا کہ آپ نے پچھلے حکومتوںکے دور کو بھی دیکھا اور میرا دوربھی دیکھاہے کس طرح میں نے تمام طبقات کیلئے اقدامات کیئے ہیں اور اگرآپ کی دعا رہی تو مزید ترقیاتی اور سہولتوں کے اقدامات کیئے جائیںگے انہوںنے کہا کہ اقامتی اسکولوں کے قیام سے مسلم طلباء کو علم کے زیورسے آراستہ کیا جارہاہے تاکہ مستقبل میں یہ بچے اپنا اور اپنی ریاست کانام روشن کرتے ہوئیے اپنی صلاحیتوں کو پروان چڑھائیں ۔ انتخابی جلسہ میں سابقہ نائب صدرنشین بلدیہ بھینسہ اعجازاحمدخان نے ٹی آرایس میںشمولیت اختیار کرلی ۔ خانہ پور میں کارگذار چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے آج عوام پر زور دیا کہ وہ کس کوووٹ دینا چاہتے ہیں ۔ اُس پر اچھی طرح غور کریں ۔ اور مکمل غور کے بعد ہی احتیاط کے ساتھ حق رائے دہی سے استفادہ کریں ۔ ووٹ کے حق سے استفادہ سے قبل اس بات کا بھی خیال رکھیں کہ کئی افراد، آپ سے کئی وعدے کرتے ہیں اور اس بات پر بھی غور کریں کہ کس طرح ماضی میں کانگریس اور تلگودیشم پارٹی نے آپ کو نظر انداز کردیاتھا اور ووٹ ڈالنے سے قبل گذشتہ4برسوں کے دوران ٹی آر ایس دور حکومت میں انجام دئیے گئے ترقیاتی کاموں کوبھی مدنظر رکھیں ۔ ترقیاتی کاموں اور فلاحی اسکیمات پر عمل آوری کی اساس پر ہی ٹی آر ایس کو ووٹ دے کر اس سیکولر پارٹی کو ریاست میں دوبارہ برسر اقتدار لائیں۔ خانہ پور میںٹی آر ایس کے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کے سی آر نے کہاکہ عوام کو یہ سوچنا ہوگا کہ کس کو منتخب کرنا ہے ۔ کانگریس اور تلگودیشم پارٹی کے وعدوں اور دعوؤں کے جھانسہ میں نہ آئیں ان دوجماعتوں نے گذشہ برسوں کے دوران تلنگانہ اور عوام کی ترقی کیلئے کچھ نہیں کیا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ اگر کانگریس کو برسر اقتدار لائیں گے تو، ٹی آر ایس حکومت نے جو ترقیاتی کام شروع کئے ہیں ان تمام کو رد کردیا جائے گا۔

جواب چھوڑیں